یعقوب یاور: ناول سے ترجمہ تک کا سفر

ماریو پوزو کا ناول گاڈ فادر امریکا اور سسلی کے مافیا گروہ کی حیرت انگیز واقعات پر مشتمل کہانی ہے۔ گاڈ  فادر کا بننا آسان نہیں۔ اسکے لئے صبر و تحمل اور مستقل مزاجی کی ضرورت ہوتی ہے۔ مافیا خاندان ایک دوسرے کے دشمن ہونے کے باوجود ایک دوسرے کی…

جارج آرویل کا انیمل فارم اور خوف میں ڈوبا ہوا ہندوستان 

2019 سے پہلے حکومت اپنی ناکامیوں کی کہانی ہندوستانی عوام کو نہیں سنانا چاہتی۔ اب جو میڈیا ہے وہ مسلمانوں سے نفرت تقسیم کرنے کے لئے چھٹے سانڈ کی طرح آزاد۔ ۔اظہار راہے کی آزادی کے قتل کا دردناک منظر دیکھنے کے لئے ہم زندہ ہیں، اور یہ داستان…

دانیال: وہ خدا کو اپنی نظم سنانے گیا ہے

سائنسی چیلنج کے سامنے نظم ونثر، شاعری اور ادب سیلاب بلایا ان دیکھے طوفان میں ایسے گھرگیا ہے کہ ہردور میں، شیکسپئر سے دانیال تک شاعر انسان، خدا، لفظ اور معنی کی تلاش وجستجو میں اپنی دانست بھر فکر کو آزاد کرتا ہے اور ان کے معنی سمجھنے کی کوشش…

مشہور افسانہ نگار اور ناول نگار شفق کی یاد میں 

ہم میں سے ہر کوئی مہاجر ہے، جس کی رواثت گم ہے اور المیہ یہ کہ وراثت گم ہونے کااسے احساس بھی نہیں۔ میں تھک چکا ہوں۔ بازیگر کی طرح اس کی کتاب بھی میری کتابوں کے درمیان سے ہجرت کرچکی ہے۔ وہ آخری نسخہ مجھے نہیں مل سکا— شفق کی کہانیوں پر سیریئل…

باقی ہے نام ساقیا تیرا تحیرات میں

حقیقت یہ ہے کہ صلاح الدین پرویز کے معاملے میں، ادب کے پردے میں کوئی اور ہی کھیل کھیلا جاتارہا۔ دولت تو بہتوں کے پاس ہے لیکن صلاح الدین کی شخصیت پر لکھے جانے والے مقالوں نے اسے طلسمی داستانوں کا کردار بناکر رکھ دیا اورصلاح الدین سے اس کی…

دوزخی (پہلی قسط)

یہ میرے لیے زندگی کے ناقابل فراموش لمحات میں سے ایک لمحہ تھا۔ بچپن میں ایک کتاب پڑھی تھی ’طلسم ہوشربا‘— قہقہہ لگانے والی آواز کی طرف دیکھنے والی شخصیت پتھر کی ہوجاتی ہے۔ لیکن یہاں ہنس کون رہا تھا—؟ یہاں تو تین کمروں کے فلیٹ کے ایک اداس بستر…

مسلمان ہیں، تو کیا مار ڈالو گے؟ (تیسری قسط)

یہ کیسا ملک ہے جہاں کویی مسلمان اگر گائے پالتا ہے تو بھگوا طالبانی اسے جان سے مار دیتے ہیں۔ ستر فی صد کسانوں کا ملک جہاں مسلمانوں کی بھی بڑی آبادی زراعت پر منحصر ہے اور کھیتی باڑی کر کے گاہے بھینس رکھ کر اپنا گزارا کرتی ہے۔ ۔راجستھان میں…

آہ! کانگریس (دوسری قسط)

لکڑ بگھوں کے ہنسنے کی آواز پر توجہ دیجئے۔ ۔ان لکڑ بگھوں کو پھیلنے سے روکیے۔ ۔یہ لکڑ بگھے خوفناک درندے ہیں۔ اپنی تھذیب، اپنی شناخت اور ملک کی سالمیت چاہتے ہیں تو پپو کے سو گناہوں کو معاف کر، آپکو راہل کے ساتھ ہونا پڑے گا۔ ۔اور یاد رکھیے۔…

علی گڑھ: پس منظر نہیں، منظر کی خبر لیجیے

ابھی بھی علیگڑھ کے طلبہ کے لئے پر زور حمایت سامنے نہیں آیی ہے۔ یہ وقت تاریخ کے صفحات الٹنے کا نہیں۔ جاہلوں سے امید نہ رکھیں کہ انہوں نے تاریخ کا مطالعہ بھی کیا ہوگا۔  جامعات کو بچانے میں اپنا کردار ادا کیجئے۔ 

انتقام اور نفرت کی ایسی بارش نہ کرو کہ ہندوستانیوں کے صبر کا پیمانہ چھلک جائے

یہ دور اپنی تمام سفاکیت اور بر بریت کے ساتھ لوٹ آیا ہے۔ اس دور میں ، اس سیاسی نظام میں کچھ بھی ممکن ہے۔ ہم تھذیبی و قومی وراثت کے ساتھ ہندوستان کو بھی لٹتا ہوا دیکھ رہے ہیں اور خاموش ہیں۔

وہ تیار ہیں، انصاف کے تابوت میں آخری کیل ٹھوکنے  کے لیے!

عدلیہ کے تابوت میں آخری کیل ٹھوکنے  کا کام شروع  ہو چکا ہے۔ پچھلے چار برسوں میں گن گن کر سارے قاتل آزاد کر دیے  گئے۔ تمام مجرموں کو آزادی کا پروانہ دے دیا گیا۔ عدلیہ کے سہارے حکومت نے اپنے خلاف ہر فیصلے کو ختم کرا دیا۔ امت شاہ اب قانون کی…

سلمان خورشید کے بیان کا مقصد کیا ہے؟

موجودہ بی جے پی کی حکومت کے خلاف جب بغاوتیں سر اٹھا رہی ہیں ، سلمان خورشید کا متنازعہ بیان آپسی ملت اور جمہوری نظام کو کمزور کرنے کے لئے کافی ہے۔ اس بیان سے فائدہ آر ایس ایس اور بی جے پی کو ہوگا۔ وہ پہلے بیدار کیوں نہیں ہوئے، اسکا جواب…

گلیشیئر ٹوٹ رہے تھے اور میں خواب کی زمین پر چل رہا تھا

ہم جاگتے ہوئے بھی نیند میں ہوتے ہیں۔ جیسے نیند میں ہوتے ہیں تو ہم زیادہ جاگتے ہیں۔ جیسے آنکھوں کے آگے دور تک پھیلی ہوئی نہ ختم ہونے والی دھند ہوتی ہے۔ یہ دھند ہمیں گلیشیئر پر تیرتے خواب سے برآمد کرتی ہے۔۔۔ یا گلیشیئر میں تیرتے خواب، دھند…

ڈاکٹر کفیل ہونا ہی فسطائی طاقتوں کی نظر میں جرم ہے

ڈاکٹر کفیل کو سزا دینے والے وہی انتہا پسند ہیں ، جو ہندو راشٹر کے تصور میں کسی بھی مسلمان کو جگہ دینے کے لئے تیار نہیں ۔ کچھ دن پہلے بھگوا تنظیم کے سپریمو کا ایک بیان بھی وائرل ہوا  تھا کہ مسلمانوں کی ہلاکت کیوں ضروری ہے ؟ یہی سپریمو جب…

عدلیہ عوام کے نشانے پر ہو تو سمجھ لیجیے، ملک مر چکا ہے!

جسٹس دیپک مشرا کے خلاف مواخذہ کی تحریک چلا کر راہل گاندھی نے بڑا کام کیا ہے۔ پچھلے چار برسوں سے عدلیہ کی ہر کاروایی کے پیچھے مرکزی دباؤ سے انکار نہیں کیا جا سکتا۔ کانگرسس کے کچھ اہم لیڈروں نے اس تحریک میں شامل نہ ہو کر ملک کو ابھی بھی…

 مسٹر ولی رحمانی! کس سادگی سے آپ نے  ہندستانی مسلمانوں کا سودا کر لیا

مودی حکومت کے اقتدار میں آتے ہی مسلمانوں کے صبر کا پیمانہ تو لبریز ہوا لیکن ملک کے مسلمانوں نے جس صبر و تحمل کا ثبوت  دیا، اس نے بھی ایک مثال  قایم کی .سوشل ویب سایٹس پر کسی نے ربیش کمار کے چہرے پر داڑھی لگا کر انکی تصویر پوسٹ کی تو رویش کو…

اگر ای وی ایم سے بین نہیں ہٹتا ہے تو…!

یقین کے مبہم راستوں پر جلتی ہوئی ایک قندیل نظر آتی ہے.بیلٹ پیپر سے چناؤ. کانگریس اور اپازیشن کو بس یہی راستہ اختیار کرنا چاہیے ..یہ اندھیرے میں امید کی ایک کرن ہے کہ شاید کویی معجزہ ہو جائے۔ اگر ای وی ایم سے بین نہیں ہٹتا ہے تو کانگریس اور…

کھلونے دے کے بہلایا گیا ہوں

پہلو خان بھی ذبح کردئیے جاتے ہیں ۔ ہاتھ میں ترشول لئے خوفناک چہروں والے گﺅ رکشک دھوکہ سے مسلمانوں کوہندوستان کے ہر صوبے میں قتل کرنے کے بہانے تلاش کررہے ہوتے ہیں ۔ حکومت چپ۔ آر ایس ایس چپ۔ انصاف چپ۔ مسلمان چپ۔ عدلیہ چپ۔ غلطی سے کسی ایک…

طلاق ثلاثہ، بابری مسجداور جلا وطن مسلمان: یہ کس مقام پر ہم کو حیات لائی ہے 

ہندوستانی سر زمین پر مستقبل کے جو مناظر میں دیکھ رہا ہوں ، وہ شاید ملی تنظیمیں ابھی بھی دیکھ نہیں رہی ہیں ..یا وہ اس خوش فہمی کی شکار ہیں کہ حالات اس سے زیادہ خراب نہیں ہو سکتے ...اب تک نشانے پر مسلمان تھے اب مذھب بھی نشانے پر آ گیا ہے…

مسلم مخالفت کے پردے کا اصلی کھیل کیا ہے؟

مسلمان نہ بھولیں کہ آج بھی بڑا اکثریتی طبقہ انکے ساتھ ہے . یہ وقت ہوشیاری اور دور اندیشی سے کام لینے کا ہے .ملک کے تحفظ کی ذمہ داری صرف اکثریتی طبقہ پر نہیں ڈالی جا سکتی .راجستھان اور مغربی بنگال کے انتخاب نے بہت کچھ کہہ دیا ہے ...ہم وقت کا…

30 جنوری: آج ایک مخصوص نظریہ کی حکومت نے گاندھی کو مار ڈالا 

گاندھی کے نظریات و افکار کی ایک دنیا معترف ہے .ایک وقت تھا جب ان نظریات نے عالمی سیاست کو متاثر کیا ..پھر ہم ایک ایسے عھد سے وابستہ ہو گئے جہاں ان نظریات کی چنداں ضرورت نہ تھی .گاندھی کے عھد میں بھی پہلی اور دوسری جنگ عظیم نے انسانی معاشرہ…

جمہوریت کا قتل کرنے والوں کو یوم جمہوریہ منانے کا حق نہیں 

آشرم سے نکلنے والے بلاتکاری جیلوں میں بھی عیش  کی زندگی گزارتے رہے .رام پال کو پکڑنے کے لئے پولیس کا دستہ آیا تو ایک بار پھر پورا شہر آگ کی لپٹوں میں نظر آیا .لاکھوں کروڑوں کی جاےداد اس بار بھی پھونک دی گیی -- مگر یہ لوگ زہریلے نہیں تھے…

کیا سپریم کورٹ کے چار جج جمہوریت کی حفاظت کر سکیں گے؟

سوال ہے، کیا ملک کے حالات، دلت اور مسلمانوں کے حالات سے ہمارے جج آگاہ نہیں ؟ کیا صرف چارجج ہی ضمیر کی عدالت میں پیش ہوئے ہیں ؟ جیسا میڈیا ہنگامہ کر رہی ہے ...یہ حقیقت ہے کہ انصاف بھی تقسیم ہوا لیکن مکمل انصاف کبھی تقسیم نہی ہو سکتا…

بابری مسجد، شری شری روی شنکر اور نیی ڈیل 

فیصلہ جو بھی ہو لیکن اس حال میں شری شری روی شنکر، آرٹ آف لیونگ کے بانی کا سہ روزہ پروگرام یاد آتا ہے، جب پروگرام کے خاتمے کے بعد دلی کا وہ حصّہ کوڑے کے ڈھیر میں تبدیل ہو گیا تھا ...اب وہ مہربان ہیں تو آگے کیا کیا ہوگا، ابھی سے سوچ کر آپکو…

اندھوں کا مقبرہ، شاہی بیان اور سچ کو دفن کرنے کی تیاری 

سچ کو دفن کرنے کی خبر چھتیس گڑھ سے آی ہے .سینئر صحافی ونود ورما کو انکے گھر غازی آباد سے اس لئے گرفتار کیا گیا کہ انکے پاس چھتیس گڑھ حکومت کے وزیر راجیش مونت کی سیکس سی ڈی تھی .یہاں بھی اندھی نگری چوپٹ راجا کی مثال دی جا سکتی ہے، جس نے جرم…