مری فنا سے ہے پیدا دوام آزادی

جو قومیں ماضی اور حال کی روشنی میں احتساب کا فن جانتی ہیں وہ آزادی کی بقاء اور تحفط بھی خوب کر سکتی ہین، تاریخ کو زمین کی تہوں میں دفن کرکے منزل کا حصول اور اور خوبصورت وپرسکون زندگی ناممکن ہے جسکی ہزاروں دلیلیں تاریخ کے دامن میں موجود ہیں…

جسم آزاد عقل محصور!

یہ جملہ پڑھ کر میں نہیں جانتا کہ کس کس پر کتنا گہرا اثر پڑا لیکن میرے اندر آگ سی لگ گئی، پل بھر میں میرے دل ودماغ میں بہت ساری باتیں ابھرنے لگیں، اس اشتہار نے نہ جانے کتنے حادثوں کو اچانک میرے دل و دماغ کی وادیوں میں جگا دیا  ایسا لگا جیسے…

محبت رسول کامیابی کا ضامن!

ہماری عزت و حشمت کو کیوں چار چاند لگ گیا؟ہمارا کارواں نیل کے ساحل سے لیکر کاشغر کی خاک تک کیوں کامیابی و سرفرازی کے جھنڈے گاڑتا ہوا بڑھتا ہی رہا؟ہماری شان و شوکت کیوں نقطۂ عروج تک پہونچ گئی؟کیا سبب تھا ان عظمتوں اور رفعتوں کا ؟کیا وجہ تھی…

زمینی خدا

غالبا آزادی سے قبل کی یہ روداد ہے جو خاندانی روایت کے مانند مجھے اپنے باپ دادا کی زبانی حاصل ہوئی ہے مجھے آج بھی یاد ہے دادا مغرب کی نماز کے بعد  گھر کے سارے بچوں کو اکٹھا کر کے کوئی نصیحت آمیز افسانہ سنایا کرتے تھے اور یہ انکا معمول…

تو انقلاب کی آمد کا انتظار نہ کر!

آگے بڑھنے سے پہلے اگر یہ واضح کر دیا جائے کہ ہماری رائے میں ہندو تنگ نظری کا اطلاق تمام ہندوؤں پرکرنا انصاف نہیں، کیونکہ بھارت اور اس کے باہر ہندوؤں کی اکثریت دلت اور نیچ ذات سے تعلق رکھتی ہے، اور یہ کروڑوں ہندو مذہبی تعصب میں مبتلا  نہیں،…

اس زمانے کا بڑا کیسے بنوں!

آج شخصی آزادی کے نام پر جوکچھ ہم نے اپنایا ہوا ہے وہ شخصی آزادی دنیا کی کوئی بھی تہذیب یا تعلیم یا فتہ معاشرہ پسند نہیں کرتا ہے۔ ترقی کے جو منازل ہم طے کرنا ہی ترقی سمجھتے ہیں وہ ہماری ناقص عقلی ہے کیونکہ وہ  دراصل انسانی تنزلی ہے.  ہمیں…

ایمان کی تجارت!

آج ہم نام کے مسلمان منافقت میں اتنے آگے جا چکے ہیں کہ دوسروں کو قبر، آخرت و محشر کے سبق کی آڑ میں مذہب کو بیچ رہے ہیں. مگر وہ پاک ذات باری بہت بڑی ہے وہ ایسے لوگوں کے چہروں پر انکی اصلیت لے ہی آتی ہے بس ہم جیسے لوگوں کو چاہیے کہ ہم اپنے آپ…

 سر سید احمد خاں: شخصیت,عقائد اور نظریات!

سر سید احمد خاں کی علمی خدمات کا اعتراف کیے بنا ہندوستان کی علمی تاریخ ادھوری ہے اس لیے کہ سر سید احمد خاں نےجو کچھ ہندوستانی سماج کو دیا ہے اسے بھلانا آسان نہیں ہے انکی کاوش اور خدمات کا قائل ہر شخص ہے ہاں خامیاں بھی تھیں انکے اندر مگر…

بھوک کا سایہ!

دعوی کرنے والے ہزارو ملینگے جو چیخ چیخ کر آپ سے کہینگے کہ ہم نے بھوک اور غریبی کا سایہ دیکھا ہے فٹپاتھ کی گود دیکھی ہے اس لیے میں یہ وقت نہیں بھولونگا, مگر ایسا کبھی نہیں ہوا ہر پیٹ کا بھوکا شکم سیر ہونے کے بعد,اپنا دن پلٹ جانے کے بعد کسی…

جو جتنا چاہے لوٹ لے اس ملک کو!

ہندوستان کی آزادی کے فورا بعد ہی بدعنوانیوں کا سلسلہ شروع ہوگیا تھا,بدعنوانی کے خاتمے کے لیے 21دسمبر 1963 کو پارلیمینٹ میں بحث ہوئی جس میں ڈاکٹر رام منوہر لوہیا نے کھلے لفظوں میں کہا تھا کہ ہندوستان میں سیاست اور تجارت کے تعلقات اتنے بد…

غلامانہ ذہنیت!

آج ضرورت ہیکہ ہمیں اپنی تہذیب اور زبان وادب سے محبت کے ساتھ ساتھ اس پر فخر ہونا چاہیے اور اسکی بقاءوتحفظ کے لیے قدم اٹھانا چاہیے اور اس پر عبور حاصل کرکے لوگوں کو اس سے آشنا کرانا چاہیے تب ہمیں سراٹھا کر کہنے کا پورا حق ہوگا کہ ہمیں…

طلبئہ مدارس احساس کمتری کے شکار!

طلبئہ مدارس جب کسی اسکول کے طلبہ کو دیکھتے ہیں کہ وہ اسکول میں انجینئرنگ کررہا ہے بعد میں اتنا کمائیگا اور ہم کو وہی چار پانچ ہزار روپئے ملتے ہیں آج کے اس ترقی یافتہ دور میں کیسے اتنی قلیل رقم میں کام چلےگا لیکن شاید وہ اس بات کو بھول جاتے…

جمہوریت کے دعویدار!

ہندوستان جیسے جُمہوری اور سیکولر ملک میں جہاں مختلف مذاہب کے ماننے والے صدیوں سے رہتے آئے ہیں اور ہندوستان کے تہذیبی تنوع، رنگا رنگی، دل کشی اور کثرت میں وحدت اور وسیع النظری کا نمونہ پیش کرتے ہیں ، محض امریکہ اور یورپ کی خوشنودی؛ بلکہ…

تحفظ نفس کے بغیر تعلیم ممکن نہیں!

طلبہ و طالبات جو قوم کے مستقبل ہیں جب انکے محافظ ہی ظالم اور بھیڑیئے نکل جائیں تو انکا وجود دوسروں سے کیسے محفوظ رہیگا,اور جب تعلیمی اداروں کا یہ حال ہوگا تو بھلا قوم میں کہاں سے ایسے لوگ پیدا ہونگے جو ملک کا نام روشن کریں , پوری دنیا اسبات…

آر ایس ایس انگریزوں کا وارث!

بھارت میں دنگے فسادات برپا کرنے میں اس تنظیم کا نام سر فہرت ہے۔ 1927ء کا ناگپور فساد ان میں اہم اور اول ہے۔ 1948ء کو اس تنظیم کے ایک رکن ناتھورام ونائک گوڑسے نے مہاتما گاندھی کو قتل کر دیا۔ 1969ء کو احمد آباد فساد ، 1971ء کو تلشیری فساد اور…

پھونک پھونک کر قدم رکھنا ہوگا!

اس وقت سوشل میڈیا پر تقریباً70 فیصد وقت محض حرام، لغو اور فضول امور کیلئے مختص ہے۔ عورتوں میں بے راہ روی کو عام کرنے کیلئے مقابلہ حسن، بچوں کے ذہنوں کو متاثر کرنے کیلئے کارٹون‘ فلمیں اور گیمس۔برائیوں کو مزید فروغ دینے کیلئے فلمی ستاروں کو…

مدارس: امید کی آخری کرن!

اسلامی مدارس اور دینی درس گاہوں کا اصل موضوع کتاب الٰہی وسنت رسول ہے۔ انھیں کی تعلیم و تدریس، افہام وتفہیم، تعمیل واتباع اور تبلیغ واشاعت مدارس عربیہ دینیہ کا مقصود اصلی ہے۔ بالفاظ دیگر یہ تعلیمی وتربیتی ادارے علوم شریعت کے نقیب،اور خاتم…

کل اور آج میں بڑا فرق!

آج ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم سب مل کر مکمل طور پر ملک کی بیماری کا پتہ لگائیں اور اس بیماری کو جو ملک کو اور اسکی امن کو کھا رہی ہے اس کو جڑ سے اکھاڑ کر پھینک دیں اور آپسی اختلاف کوختم کرکے اس بات کی طرف دھیان دیں جو ملک اور اسکی عوام کیلیے…

سیاست اس قدر گندی نہ تھی پہلے!

جمہوری دور میں سیاست سرمایہ داروں ،کے کھیل کا نام سمجھی جاتی ہے جس میں غریب صرف نعرے بازی اور ووٹ ڈالنے کی حد تک شریک ہوتا ہے اور کسی شریف آدمی کا اس میں حصہ لینا انوکھی بات سمجھی جاتی ہے کیونکہ اخلاقی لحاظ سے ہماری سیاست انتہائی پستی کی…

لفظ ‘مجبوری’ بھی حیرت میں!

اسبات سے بالکل انکار نہیں کیا جا سکتا کہ ہر دور میں عورت کو ایک کھلونا سمجھا گیا ہے اور اسکے ساتھ جو ظلم و زیادتی ہوئی ہے دوسری جنس پر کسی زمانے میں بھی اتنی زیادتی نہیں ہوئی ہے,دنیا نے ہر دور میں ترقی اور سربلندی کا نعرہ بلند کیا مگر پھر…

اب لفظ مل گئے تو میرے ہاتھ کٹ گئے!

انکی موت پر بہت سے صحافیوں اور قلمکاروں نے دکھ کا اظہار کیا مگر روش کمار پر اسکا بہت ہی زیادہ اثر پڑا انہوں نے اپنے دکھ کا اظہا ر کرتے ہوئے کہا کہ!کل سے زندہ لاش کیطرح گھوم رہا ہوں ایسا لگتا ہے مجھے بھی مار دیا گیا ہے,دوست اور چاہنے والوں…

آنگ سان سوچی نے آنکیھیں بند کر لیں!

میانمار میں مسلمان کا تہہ و تیغ کرنے کیلئے جس طرح سے ظلم و تشدد، مار پیٹ، قتل و غارت اور نسل کشی کی جارہی ہے وہ تاریخ انسانیت میں ایک سیاہ کن باب ہے۔اقوام متحدہ جہاں صرف بیان بازی میں مصروف ہے وہیں سلامتی کونسل نے روہنگیائی مسلمانوں کی نسل…

کیا مسلمان ہونا مصائب وذلت کا سبب ہے!

امت اسلامیہ کو جن بڑے بڑے مسائل کا سامنا ہے جن کی وجہ سے امت کی طاقت کو کمزور کیا گیا، اور شان و شوکت کو خاک میں ملایا گیا وہ باہمی اختلاف، فرقہ واریت، داخلی تنازعات، اور انتشار ہیں، انہی کی وجہ سے امت کو ماضی میں بھی نقصانات کا سامنا کرنا…

کیا کبھی زندگی سانپ کے پھن سے نکلی!

برما کی حکومت نے ان پرپابندی لگائی کہ وہ پختہ مکان نہیں بنا سکتے، دو سے زائد بچے پیدا نہیں کر سکتے، شادی کیلئے رجسٹریشن ضروری ہے جو اس قدر مشکل ہے کہ کسی عذاب سے کم نہیں۔ یہ لوگ اب بنگلہ دیش اور برما کی سرحد کے درمیان سمندر کے کنارے دلدلی…

دم بھر کا یہ سفینہ،  پل بھر کی یہ کہانی!

مجھے افسوس اس وجہ سے بھی ہیکہ جس نے مجھے مصائب کے وقت حوصلہ دیا اور مجھے ہمیشہ عزت کی نگاہ سے دیکھا میں زندگی میں اسکی قدر نہ کر سکا آج افسوس کر کے بھی کیا فائدہ جبکہ وہ اس دنیا میں نہیں ہے ہر بار اس نے ضد کی کہ میں اسکی دوستی کی تعریف کروں…

منزل سے آگے بڑھ کر منزل تلاش کر

اسلام نے تحصیل علوم کو ایک تحریک کے طور پر اپنے متبعین پر لازم قرار دیا، یہاں تک کہ سب سے پہلی آیت جو غارِ حراء میں محمد  صلى الله عليه وسلم پر نازل ہوئی اس میں قرأت، علم، قلم کا بطور خاص ذکر فرمایاہے، بلکہ پڑھنے کو امر کے صیغہ ”اقراء“ کے…

وقت سے آنکھ ملانے کی حماقت نہ کرنا

ہمیں وقت کی ترتیب و تنظیم کو سامنے رکھ کر اس بات کا اہتمام یا کوشش کرنی چاہئے کہ ہمارے وقت کا کوئی لمحہ ضائع نہ ہو ،اگر ہم یہ طے کر لیں کہ کون سی چیز یا کام ہماری پہلی ترجیح ہونی چاہئے ،دوسری کون سی اور تیسری ترجیح کیا ہونی چاہئے تو ہم وقت…

آزادی: حقیقت یا افسانہ

 لفظ "آزادی" بظاہر لکھنے اور بولنے میں بہت آسان اور سہل سا محسوس ہوتا ہے مگر اسکو حقائق کا لبادہ پہنانے میں اور اسے حیات انسانی میں شامل کرنے کے لئے بہت سی قربانیاں ,آلام ومصائب, دکھ درد, قید وبند کی صعوبتیں سب درکار ہیں تب جا کے کہیں آزادی…

عورت کا عروج سے زوال کا سفر

عورت ماں بھی ہے،بہن بھی ہے، بیوی اوربیٹی بھی اورسماج میں زندگی گزارنے والی پرائی بھی،عورت سے یہ مرد کے رشتے ہیں ۔ ان سارے رشتوں کو عصمت اورعظمت کے دھاگہ میں قدرت نے گوتھ رکھاہے۔ مردکی زندگی کی بھلائی اورمستقبل کی تابانی اسی میں ہے کہ وہ اس…

میڈیا کا غیر ذمہ دارانہ رویہ

بلا شبہ معاشرے کے رویوں سے آگاہ کرنا میڈیا کا فرض ہے مگر بد قسمتی سے میڈیا نےسچائی سے منہ موڑ کر ہمارے  معاشرے میں طرح طرح کے خرافات اور فساد پھیلا رکھے ہیں اور ایسی ایسی افواہیں پھیلا رکھی ہیں کہ عوام لا یعنی باتوں کا شکار ہو کر اصل مقصد…