کیا مسلمانوں کو مودی سے ڈرنے کی ضرورت ہے؟

یاد رکھئے کہ دنیا میں یہودیوں کی کل آبادی ایک کروڑ سینتالیس لاکھ ہے اتنی چھوٹی سی تعداد ہونے کے باوجود وہ پوری دنیا کا نظام چلارہی ہے اور ہماری تعداد تو صرف ہندستان میں بیس کروڑ ہے اور اتنی بڑی آبادی کو مٹانا کوئی آسان کام نہیں بس ضرورت ہے…

مولانا محمد واضح رشید ندوی

ایسے روح فرسا دور میں ہمارے درمیان سے ایک ایسے شخص کا اچانک چلے جانا کیا اس دور کا سب سے بڑا خسارہ نہیں ہے؟ کیا اس صدی کا سب سے بڑا نوحہ نہیں ہے ؟ ایسا شخص جو تقریبا چھ دہائیوں سے اپنا لہو جلاکر چمن کو شاداب کررہا تھا، فکر نظر کی قندیلیں…

جمال خاشقجی: اور ایک قلم کو ٹوڑ ڈالا گیا

یہ معاملہ میرے لئے اسوقت اور زیادہ تکلیف دہ تھا جب چند سالوں قبل میرے کچھ دوستوں کو گرفتار کرلیا گیا تھا لیکن اسوقت میں اپنی قوت گویائی کو لب اظہار نہ دے سکا تھا  کیونکہ میں اپنی نوکری اور اپنی آزادی کھونا نہیں چاہتا تھا  اور اپنے اہل وعیال…

خلافت و ملوکیت: مقاصد شریعت کی روشنی میں 

افسوس کہ اس ذہنی غلامی کا دور اب تک ختم نہیں ہوا ہے، اسلام جس ذہنی جمود کو توڑنے کے لئے آیا تھا وہ اب بھی برقرار ہے، فکر ونظر کی جولانیاں سرد پڑ گئی ہیں، بحث وتحقیق بھی روایت پرستی کا شکار ہے، آزادانہ غوروفکر پر بندشیں عائد ہیں یہی وجہ ہے…

نفسیاتی شكست

دنیا میں اس وقت جو بھی ترقی ہو رہی ہے، علوم وفنون کے جتنے بھی سر چشمے بہہ رہے ہیں وہ دراصل انھیں عظیم انسانوں کی عقل کی زکاۃ ہے۔

ٹرمپ کے نام ایک کھلا خط

کسی بھی ملک کی تباہی کیلئے اس سے کارگر نسخہ اور کوئی نہیں کہ اس ملک کی زمام اقتدار کسی احمق آدمی کے ہاتھوں میں سونپ دی جائے، میری اللہ میاں سے التجا ہے کہ تمہارا عہد حکومت اس بربادی کا نقطئہ آغاز ثابت ہو، امریکہ کیلئے تمہارا عہد حکومت حضرت…

کینسر کی ابتدائی علامتیں

کینسر ایک ایسا موذی اور مہلک مرض ہے جس کا شکار دنیا کی ایک بڑی آبادی ہرسال ہوتی چلی آرہی ہے، اعداد وشمار کے مطابق مرنے والوں میں سے ہر چھٹا آدمی کینسر کا مریض ہوتا ہے،  کینسر سے مرنے والوں کی تعداد امراض قلب کی اموات کے بعد سب سے زیادہ ہے،…

عمران خان: ستارے جس کی گرد راہ ہوں 

عمران خان نے جواب دیا جج صاحب ہمارے ملک کی عوام بہت غریب ہے ان کے پاس زندگی کی بنیادی سہولیات تک مہیا نہیں ہیں، بھلا میں اس حال میں انھیں چھوڑ کر کیسے جاسکتا ہوں میں ان کیلئے کچھ کرنا چاہتا ہوں، یہ جواب سن کر جج اپنی نششت سے کھڑا ہوگیا اسے…

پیغمبر اسلام ﷺ كی آخری وصيت

آپ صلی اللہ علیہ وسلم پر میرے ماں باپ فدا ہوں۔ آپؐ رحمت للعالمین بناکر بھیجے گئے اور اپنی آخری سانسوں تک امت کے حق میں دعائے خیر کرتے رہے، اے اللہ ہمیں قیامت کے روز اپنے نبی کی شفاعت عطا فرما اور اس امت کے احوال درست فرما اور ہمیں ذلت سے…

خوشحال زندگی کا فارمولہ

روز انہ ایک گھنٹہ مطالعہ کرے ابتداءا اس عمل میں دشواری محسوس ہوتی ہے لیکن چار ماہ کی پابندی کے بعد انسان کو وہ خوشی حاصل ہونے لگتی جسے الفاظ بیان نہیں کر سکتے کیونکہ مختلف کتابیں انسان کوایک ایسی دنیا میں لے جاتی ہیں جہاں بہت سکون اور مسرت…

علم اور مال

موجودہ زمانہ مسلمانوں کے تجارت ومعیشت میں پیچھے رہ جانے کا ایک اہم سبب موجودہ بینک کاری کے نظام سے دوری بھی ہے اسوقت دنیا کی پچھتر فیصد معیشت بینکوں کے ذریعہ چلتی ہے اور دنیا کے ننانوے فیصد بینک سودی نظام پر چلتے ہیں اور چونکہ سود حرام ہے…

آتش تلخی حالات میں کیا کچھ نہ جلا

ان دنوں مولانا سلمان حسینی ندوی صاحب کے بابری مسجد سمجھوتہ فارمولہ اور مسلم پرسنل بورڈ سے ان کے ہٹائے جانے کے موضوع نے پورے ہندستانی میڈیا میں ایک ہیجان برپا کررکھا ہے شوشل میڈیا پر بھی ایک طوفان بپا ہے، عمل پھر رد عمل پھر رد عمل کے ردعمل…

ویلنٹائن ڈے

محبت ایک فطری عمل ہے اور محبت کا جذبہ قدرت نے نہ صرف انسان بلکہ دنیا کی ہر مخلوق کی طبیعت میں ودیعت کی ہے اگر محبت نہ ہوتی تو دنیا کا کوئی بھی رشتہ مستحکم نہ ہوتا، محبت ایک جذبہ ہے ایک کشش ہے ایک مقناطیسی قوت ہےایک کیفیت ہے جسے بیان کم اور…

بابری مسجد تنازعہ: ایک جلتا زخم

بابری مسجد کی تعمیر کب ہوئی؟ اس کی تعمیر کس نے کی؟ بابری مسجد کی تعمیر سے قبل وہ زمین کس کی ملکیت تھی؟ اس کی تعمیر سے قبل وہاں کیا تھا؟ ان سارے سوالات کے جوابات تاریخ کے سینے میں محفوظ ہیں لیکن آزادی سے قبل بھی اور آزادی کے بعد بھی بابری…

بدلتا بھارت اور ہماری اولین ترجیحات

مسلمانوں کا ملی وجود مٹانے کی کوششیں تیز تر ہورہی ہیں اسلئے مسلمانوں کو تعلیم، تجارت سیاست میں عرق ریزی کرنی پڑے گی اور اپنی صفوں کو درست کرنا پڑے گا، اپنے ملی وجود کی حفاظت ساتھ ساتھ اس ملک کو بھی ان مادہ پرست، خود غرض اور کرپٹ لوگوں سے…

لمحات آگہی

غالبا فروری 2017 کا مہینہ تھا دوحہ قطر میں ایک بڑا عالمی مشاعرہ ہورہا تھا پورا اسٹیج بقعۂ نور بنا ہوا تھا الوک کمار سریواستو پہلی بار نظامت کے فرائض انجام دے رہے تھے اور بڑی اچھی نظامت کررہے تھے، یکے بعد دیگرے مختلف شعراء کرام اپنا کلام…

کتاب ’حضرت مولانا علی میاں ندویؒ: یادوں کے جھروکے سے‘ کا رسم اجرا

12 جنوری 2018 کی رات ایک یادگار ادبی تقریب کے دوران مذکورہ کتاب کی رسم رونمائی عمل میں آئی،  تقریب کے ناظم اور جدید ترقی پسند شاعری کی معروف آواز جناب عتیق انظر صاحب نے فرمایا: کہ اس کتاب کے مصنف ہمارے عزیز دوست اور کاروان اردو قطر کے…

حضرت مولانا علی میاں ندویؒ: یادوں کے جھروکے سے (آخری قسط)

حضرت مولانا کی شہرت ومقبولیت صرف علماء کے درمیان ہی نہیں تھی بلکہ عرب حکام وسلاطین سے بھی مو لانا کے اچھے روابط تھے، مو لانا وہاں بھی اپنے داعیانہ کردار کو نبھاتے اورانھیں بعثت نبوی کے مقاصد اور مسلمانوں کے مسائل سےآگاہ فرماتے اور ’الدین…

حضرت مولانا علی میاں ندویؒ: یادوں کے جھروکے سے! (قسط 5)

مو لانا کے مزاج میں درویشی تھی، وہ تصوف بمعنی احسان کےقائل تھے، کچھ لوگوں نے تصوف کو موضوع بناکر جب مولانا پرتنقید کی تو مو لانا نے 'ربانية لا رهبانية ' نامی بڑی معرکۃ الآراء کتاب لکھی اور اس کتاب میں ایک بڑا خوبصوت سا عنوان لگایا ' جناية ا…

حضرت مولانا علی میاں ندویؒ: یادوں کے جھروکے سے! (قسط 4)

ابتدائی زمانہ میں کافی دنوں تک مولانا کو تنگ دستی کا سامنا کرنا پڑا تھا، ایک دن کا واقعہ مجلس میں یوں بیان فرمانے لگے کہ میں صبح دارالعلوم میں گھنٹہ پڑھا کر آیا، ناشتہ کا وقت تھا، بڑی بھوک لگی ہوئی تھی اور جیب میں ایک پیسہ بھی نہیں تھا، میں…

حضرت مولانا علی میاں ندویؒ : یادوں کے جھروکے سے (قسط: 3)

حضرت مولانا کی شان بے نیازی اسی طرح کی تھی، وہ دنیا سے بقدر ضرورت ہی لیتے تھے، ان کی زندگی سادگی کا نمونہ تھی، معمولی سے معمولی آدمی ہو یا ادنی سے ادنی طالب علم یا پھر کوئی صاحب جاہ و ثروت وہ بڑی آسانی سے سب کو میسر آجاتےھے۔ مولانا کی…

حضرت مولانا علی میاں ندویؒ : یادوں کے جھروکے سے (دوسری قسط)

حضرت مولانا اپنی مجلسوں اکثر ملک شام کے مشہور محدث شیخ سعید الحلبی کا واقعہ بڑے والہانہ انداز میں بیان فرماتے واقعہ یوں ہے کہ شام کا آمریت پسند باشاہ ابراہیم باشا ایک دن مسجد اموی میں داخل ہوا جہاں شیخ سعید حلبی طلبہ کو درس دینے میں مشغول…

حضرت مولانا علی میاں ندوی رحمۃ اللہ علیہ: یادوں کے جھروکے سے!(قسط: 1) 

میں نے آج تک ندوہ کی تین شخصیات کے بارے میں ان کے کسی بھی ادنی سے ادنی شاگرد کو نکتہ چینی کرتے ہوئے نہیں پایا، ان میں ایک شخصیت مولانا ابو العرفان صاحب رحمہ اللہ کی تھی، دوسری شخصیت مولانا نور عظیم ندوی مرحوم کی تھی اور تیسری شخصیت جو ان…

سوشل میڈیا: غور و فکر کے چند پہلو

ہر چیز کے دو پہلو ہوتے ہیں ایک مثبت اور دوسرا منفی، سوشل میڈیا بھی اس کلیہ سے مستثنی نہیں ہے۔ سوشل میڈیا ذرائع ابلاغ کی دنیا میں ایک انقلاب ہے، آج دنیا  کی رائے عامہ بنانے میں اسکا انتہائی اہم کردار ہوتا ہے، یہاں تک کہ حکومتوں کو بنانے اور…

سلفیت مدح وتنقید کے حوالے سے ایک تجزیہ

جماعت اہلحدیث ایک فقہی مسلک کا نام ہے اور یہ ضروری نہیں کہ جو اہلحدیث ہو وہ جمعیت اہلحدیث سے تعلق بھی رکھتا ہو اسی لئے یہ لوگ کسی بھی دوسری جماعت، تنظیم یا مکتب فکر کا حصہ بن جاتے ہیں، جہاں تک جمعیت اہلحدیث کا تعلق ہے تو اب یہ جمعیت کسی …

مرزا  اطہر ضیا: آواز اہل دل

اطہر ضیا سے میری ملاقات کبھی نہیں ہوئی لیکن ان کی شاعری جب جب  بھی میری نظر سے گزری، دل میں اترتی چلی گئی،اطہر ضیاایک ایسا  شاعر ہے جس کی شاعری پوری قوت کے ساتھ اپنی طرف متوجہ کرتی ہے، اس کا سفرِذات آپ کو اپنی زندگی کا سفرنامہ محسوس ہوگا،…

عتیق انظر کی نظم،دوسرے جسم کی خواہش: ایک تجزیاتی مطالعہ!

عتیق انظر دوحہ کے ممتاز سینئر شاعر، ادیب اور نقاد ہیں ، پچھلے دنوں ، اللہ نے انھیں ایک نادر مرض میں مبتلا کر دیا، پورا جسم سر سے پاؤں تک چھالوں کی زد میں آگیا، چھالوں کی ایک کھیپ ختم نہیں ہوتی کہ دوسری اور تیسری وجود میں آ جاتی ہے جسم میں…

برہمن اور بنیا برادری کے  تسلط کا خاتمہ کب ہوگا!

اس مقدمہ کو ذہن میں رکھ کر اگر آپ ہندوستان کا منظرنامہ سمجھنے کی کوشش کریں تو شاید بہت سے پہلو خود بخود واضح ہو جائیں گے۔ اس حقیقت سے بھی پردہ اٹھ جائےگا کہ آخر زندگی کے تمام میدانوں میں آج کے ہندوستان میں جن طبقوں کا نشہ سر چڑھ کے بولتا ہے…

ہندستانی مسلمان کیا کریں؟ (دوسری قسط)

مادی اور اقتصادی اعتبار سے مضبوط ہونا کتنا ضروری ہے اس کا اندازہ آپ اس بات سے لگا سکتے ہیں کہ جہاں اقتصادی طور پر کمزور ہونے کے بعد حکومتوں کے لئے اپنا توازن برقرار رکھنا نا ممکن ہو جاتا ہے وہیں افراد اور خاندانوں کے لئے اپنا وقار محفوظ…