زندہ معاشرہ اور مردہ معاشرہ

اب اپنے وطن لوٹئے۔ہمارے یہاں معاملہ مکمل طو رپر اس کے برعکس ہے۔ دہشت گردی کے ملزم اراکین پارلیمنٹ بن جاتےہیں، گائے کے لئے انسانی جان کو قتل کردینا جائز سمجھا جاتا ہے،  جئے شری رام کے نعرے لگانا انسانیت کے تمام اصولوں سے اعلیٰ و ارفع مانا…

رافیل طیارہ گھپلہ

اگر یہ سارے لیڈران بھی رافیل معاملے میں اسی طرح حکومت پر حملہ آور ہوجائیں جیسا کہ بوفورس میں تمام اپوزیشن پارٹیوں نے کیا تھا تو حکومت  کے بکھرنے میں زیادہ دیر نہیں لگے گی، کیونکہ  جھوٹ کے پیر نہیں ہوتے۔

مہاگٹھ بندھن میں کانگریس کی عدم دلچسپی

جیسے  یوپی میں کانگریس چوتھے نمبر پر پہنچ گئی، بہار میں بھی یہ چوتھے مقام پر پھسل گئی ہے، مغربی بنگال میں اس کا وجود نہ کے برابر ہے، دہلی میں  فی الوقت ایک بھی ایم ایل اے نہیں ہے، تمل ناڈو میں وہ اپوزیشن کے عہدہ سے بھی بہت دور ہےآندھرا،…

خبر لشکر طیبہ کے حملے کی تھی اور تیاری سناتھن سنستھا نے کر رکھی تھی

اس معاملے میں بھی دہشت گردوں کی حمایت میں ایسی طاقتیں آجائیں گی جن کے آگے تحقیقاتی ایجنسیوں کے دست و پا ڈھیلے پڑ جائیں گے۔ ہمارے یہاں دہشت گردانہ حملے اور ان میں ہونے والی انسانی ہلاکتیں نہیںدیکھی جاتی ہیں بلکہ  دہشت گردوں کے چہرے، نام…

عمران خان

  کیا واقعی عمران خان ایسی فلاحی ریاست یا اس کا کوئی معمولی سے ہی عکس جیسی ریاست قائم کرپائیں گے؟ یہ ایک بہت بڑا سوال ہے،کیونکہ اگر عمران خان ایسی کوئی ریاست قائم کرنے میں کامیاب ہوتےہیں تو یہ شیطان کی بہت بڑی شکست ہوگی۔ کیا شیطان اپنی شکست…

جب برطانیہ میں دارالقضا قائم ہوسکتے ہیں تو ہندوستان میں کیوں نہیں؟

ہندوستان کا نظامِ ِعدلیہ ویسے بھی سست رفتاری میں اپنا ثانی نہیں رکھتا۔ انڈین ایکسپریس کی جنوری ۲۰۱۷ء کی رپورٹ کے مطابق ہندوستان کی ضلعی عدالتوں میں ۲؍کروڑ۸۱؍لاکھ معاملات زیر التوا  ہیں۔ اس رپورٹ میں یہ بھی کہا گیا کہ ڈسٹرکٹ کورٹ میں…

فلم سنجو اور قومی دھارے کے میڈیا کی تلملاہٹ

یہ ہمارے لئے قابلِ غور مقام ہے کہ ایک شخص جس نے قانون کے ساتھ مکمل تعاون کیا۔ جس نے اعترافِ جرم کیا۔ ہما را میڈیا بجائے اس کی تعریف کرنے کے آج بھی اسے دہشت گرد کہنے میں ہی فخر محسوس کررہا ہے۔ کیا ایسا کرکے ہم اپنے گھٹیا سماج ہونے کی دلیل…

ہجوم زنی کے بعد جو ہوتا ہے..!

ہجوم کے دماغ پر شیطان سوار رہتا ہے۔ اسے لگتا ہے کہ وہ بہت نیک کام میں اپنا حصہ لے رہےہیں۔یہ ذہنیت، یہ نظریہ اوریہ سوچ منصوبہ بند طریقہ پر پھیلائی گئی نفرت اور زہر سے پروان چڑھی ہے۔ اس منصوبہ بندی میں ہجوم زنی کو قابل فخر کام بنا کر پیش کیا…

 گؤ رکشا اور ہندو انتہا پسندی کا شتر بے مہار

ملک میں پہلا سلاٹر ہاؤس انگریزوں نے قائم کیا تھا۔ اس مذبح میں گائے علی اعلان ذبح کی جاتی تھی۔ آج گائے کے گوشت کے شک میں مسلمانوں کو موت کے گھاٹ اتار دینے والے ہندوتوا کے ٹولے میں سے  اُس وقت اتنی ہمت نہیں ہوئی کہ وہ ملک میں کہیں بھی…

جمعہ کی نماز میں رخنہ اندازی کا فتنہ ملک کو اپنی لپیٹ میں لے سکتا ہے

دیوالی کے پٹاخے عوامی مقامات پر، بلکہ سپریم کورٹ کے سامنے تک  جلائے  جاسکتے ہیں ۔ مختلف شوبھا یاترائیں عوامی مقامات پر نکالی جاسکتی ہیں ۔ نت نئی ہندو دھرم کی یاترائیں بھی عوامی مقامات پر نکالی جاسکتی ہیں ، لیکن نماز عوامی مقامات پر ادا…

آصفہ ہم شرمندہ ہیں، تیرے قاتل زندہ ہیں

ہمیں یقین ِ کامل ہے کہ ننھی پری آصفہ  ناقابل ِ یقین نعمتوں   سے مزین جنت کے باغات میں سے کسی باغ میں آرام  کررہی ہوگی۔ باغات جن کے نیچے بہتی ہونگی ندیاں۔ ہمیں یہ بھی یقین ہے کہ وہ رب کائنات کی بارگاہ میں عرض کی ہوگی کہ اذیت کے جس سات…

شام میں کثیر رخی جنگ کا اصل ماجرا

شام کے میدان میں جاری اس جنگ میں اگر کسی کی ہار ہے تو وہ صرف اور صرف انسانیت ہے۔ عام شہری کی بےبسی ناقابل بیان ہے۔ بچے، بوڑھے، خواتین کی لاشیں ڈھوتے لوگ،  ملبوں میں اپنے مکان کو تلاش کرتے مکین، دھوئیں میں اپنے ہی لوگوں کو ڈھونڈتے رشتہ دار،…

 عوام کی عدالت میں سپریم کورٹ کا مقدمہ

جمہوریت لڑکھڑا رہی ہے اور اس کا ایک اہم ستون ڈگمگا رہا ہے۔ ہمیں خوش ہونا چاہئے کہ ہم ایسے ملک میں ہیں جہاں ضمیر ابھی پوری طرح مردہ نہیں ہوا ہے۔ اس کے رگ و پے میں اب بھی زندگی کی تھوڑی رمق باقی ہے۔ عدلیہ کے تئیں ججوں کی بے چینی نے ہمیں  …

بِٹ کوائن: عوام کی حاکموں پر فتح

کرنسی آخر ہے کیا؟ کاغذ کے ٹکڑے ہی تو ہے۔ ہم اسے کھا نہیں سکتے، اسے پہن نہیں سکتے، اس کے گھر نہیں بنا سکتے۔ہم اسے صرف اسلئے اہمیت دیتے ہیں کیونکہ انہیں بنانے والے اداروں کو ہم ’حکومت‘ کے نام سے جانتے ہیں۔ ان حاکموں کے پاس فوجیں ہیں، جنگی…

ٹو جی گھپلہ: ایک جج کا اظہارِ افسوس

 ٹو جی گھپلہ کی سماعت کرنے والے جج  او پی سائنی  بھی سات سال کی طویل شنوائی کے بعد، تقریباً ایسے ہی کرب سے گزرے۔ فرق اتنا تھا انہیں اب بھی اس کرسی پر بیٹھنے کا افسوس تھا۔ اوپی سائنی کے لہجے میں ڈوبتے چاند کی سی تھکن تھی اورصبح ۱۰؍بجے سے شام…

مسلم دانشوران کی نادانیاں

نہ کہیں جنازہ اٹھتا نہ کہیں مزار ہوتا  کی بات ہی اگر قوم کا ہیرو ہونے یا نہ ہونے کی دلیل ہوتی ہے تو بھگت سنگھ، ٹیپو سلطان، بہادر شاہ ظفر، سوریہ سین اور بھنڈران والے جیسے لوگوں آج اپنی قوم کے ہیرو نہیں ہوتے، کیونکہ ان میں سے بھی اکثر کا…

گجرات : بی جے پی کےناقابل تسخیر قلعہ پر کانگریس کی کمندیں

اس ریاست میں راہل گاندھی نے کانگریس کی کمان کسی مقامی لیڈر کو نہیں سونپی بلکہ خود اس کی قیادت کررہےہیں اوربی جےپی کے ناقابل تسخیر قلعہ کی فصیلوں پر چارو ںطرف سے کمندیں ڈال رہے ہیں۔ قلعہ کی گھیرا بندی تکنیکی لحاظ سے بہت ہوشیاری سے کی جارہی…

مسلم حکمران: ظالم یا مظلوم؟

یوگی حکومت کے وزراءکو پہلے یہ جان  لینا چاہئے کہ یوگی آدتیہ ناتھ جس گورکھ ناتھ مٹھ سے آتے ہیں اُس مٹھ کی زمین نواب سراج الدولہ نے عطیہ میں دی تھی۔ 1994ء میں آدتیہ ناتھ کے پیش رو، مہنت اویدناتھ نے آصف الدولہ کی نسل سے تعلق رکھنےوالے انجم…

گول مال ہے، سب گول مال ہے!

’ٹیمپل انٹرپرائزیز ‘ کی آمدنی جب 50؍ہزار روپے سے ایک سال میں ہی 80؍کروڑ روپے پر پہنچ گئی تب تو اگلے سال عین ممکن تھا کہ اس کی آمدنی 800؍کروڑ تک پہنچ جاتی، لیکن ایسا کچھ نہیں ہوسکا۔یکے بعد دیگرے حیرت انگیز موڑ سے گزرتی ہوئی اس کمپنی کی…

ہندوستان میں بڑھتی اور پاکستان میں کم ہوتی شدت پسندی

پاکستان دھیرے دھیرے ہی سہی، اپنی شدت پسندی کی شناخت سے ابھرنے کی سعی کررہا ہے ۔اسے اب بھی ایک طویل سفر درکار ہے لیکن اس بات میں اب شک نہیں رہا کہ پاکستان کو شدت پسندی کے نقصانات کا مکمل نہیں تو، کافی حد تک ادراک بہر حال ہوچکا ہے ۔ دوسری طرف…

نیپال میں مدھیسی اور سری لنکا میں تمل عوام کی روہنگیا سے مماثلت 

عالمی برادری کی حمایت ہمیشہ مشروط رہی ہے ۔ یہ حمایت اور مخالفت کسی انسانی قاعدے ، کسی قانون ، کسی اخلاق یا کسی ہمدردی کی بنیاد پر نہیں ہوتی ہے ۔ وہ صرف اور صرف مادّی فائدے اور نقصان کے جمع تفریق کے قاعدے پر ہوتی ہیں ۔ عالمی برادری نے آنگ…

جمہوریۂ مسلم دشمن ہجومِ ہند

جمہوریۂ ہند ’’جمہوریۂ مسلم دشمن ہجومِ ہند‘ ‘ میں بدلتا جارہا ہے۔ جہاں سیکولرزم کی حیثیت ایک تکلف کے سوا کچھ نہیں ہے اور مذہبی آزادی وہ کاغذی زیور ہے جو کاغذات تک ہی محدود ہے۔ حقیقت میں ملک ایک آتش کدہ بن چکا ہے جس کا ایندھن مسلمان…

کیا  حکومت نے طلاق ثلاثہ ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے؟

ہمارے ملک میں طلاق نہ ہی اب مذہبی معاملہ رہ گیا ہے ، نہ ہی سماجی اور نہ ہی معاشرتی۔ یہ اب صرف اور صرف سیاسی معاملہ بن گیا ہے ۔ ہندوانتہا پسندی کے بڑھتے رجحانات کی تشفیکےلئے ، اور ہندو ووٹ بینک کو خوش کرنے کےلئے تین طلاق کے مسئلہ کو ہوا دی…

’منی بل‘ کی آڑ میں حکومت کی معاشی تانا شاہی!

وطن پرستی کے شور میں اور حب الوطنی کے ہنگاموں کے پیچھے ان ’منی بلوں ‘ کی منظوری کو وہ تشہیر ہی نہیں مل سکی جس کی کہ وہ حقدار تھیں ۔ حکومت نے بھی کمال ِہوشیاری سے ان بلوں کو خاموشی کے ساتھ منظور کرادیا اور سوائے چند سیاستدانوں ، اراکین…

مسلم خواتین کے ساتھ ہمدردی یا حکومت کی مکاری!

ہمدردی کا جذبہ بہت نیک جذبہ ہوتا ہے لیکن اگر یہ خلوص نیت سے خالی اور بدنیتی سے لبریز ہوتو اسے مکاری کے سوا کوئی اور عنوان نہیں دیا جاسکتا ہے ۔ مودی سرکار کے سینے میں مسلم خواتین کے تئیں ایسی ہی غم گساری کا سونامی ٹھاٹھیں ماررہا ہے۔ مکارانہ…

بابری مسجد معاملہ اور سیکولرزم کا تاج

بابری مسجد معاملہ میں سپریم کورٹ نے ایک بار پھر گیند عدالت کے باہر پھینکنے کی کوشش کی تاکہ وہ اپنا دامن بچا سکے۔حالانکہ عدالت کے احاطۂ علم میں ہے کہ وہاں بابری مسجد موجود تھی،جسے دن دہاڑ ے ہندو انتہا پسندوں نے شہید کردیا اس کے باوجود عدالت…

آدتیہ ناتھ کا وزیر اعلیٰ بننا مودی کیلئے خطرہ کی گھنٹی

ایک یوگی آدتیہ ناتھ ، دوسرے وزیر اعظم مودی اور تیسرا سنگھ پریوار۔ ان تینوں میں تعاون اگر ٹھیک رہا تب تو ایک طوفان آنا ہے اور اگر ان تینوں میں تعاون ٹھیک نہیں رہا تب بھی ایک طوفان آنا ہے ۔ یوپی کی سیاست اپنی آغوش میں ابھی بہت کچھ سمیٹے…

کیا یوپی ہندوتوا کی دوسری تجربہ گاہ بننے جارہا ہے

شرا ب جتنی پرانی ہوتی ہے اس کا نشہ اتنا گہرا ہوتا ہے ۔ آر ایس ایس کے میکدہ میں وطن پرستی کی مے 90 ؍سال سے کشید کی جارہی ہے ا ور 90؍سال بعد اس میں بلا کا نشہ آگیا ہے ۔ اس کی تاثیر نے سارے ملک کومیکدہ بنا کر رکھ دیاہے ۔رندوں کی فوج کے فوج…

فکر وہ کریں جن کے ہاتھ سے حکومت گئی

اگر یہ کہا جائے کہ بی جےپی کی حکومت میں سنگھ پریوار مسلمانوں پر ظلم کرے گا تو کیا واقعی سماج وادی پارٹی کے دورِ اقتدار میں سنگھ پریوار کے ہاتھ پاؤں بندھے ہوئے تھے؟ اگر ایسا تھا تو پھر مظفر نگر فسادات کیسے ہوگئے؟ اگر ایسا تھا تو پھر دادری…