تعلیم و تربیت

اسلامی اسکول: اہمیت اور ضرورت

 اسلامی اسکول حقیقت میں اسے کہاجا سکتا ہے جہاں بچے اور بچیوں یا لڑکے اورلڑکیوں کو وہ تعلیم دی جائے یا وہ علم سکھایا اور بتایا جائے جو فطرت سے متصادم نہ ہو، نیچر سے ٹکرائو نہ ہو۔ سادگی اور سچائی مجروح نہ ہو، حیا سوزی کا شائبہ نہ ہو انسانیت کی گراوٹ اور اخلاق میں بگاڑ پیدانہ ہو بلکہ بچے بچیوں ، لڑکے لڑکیوں میں تہذیب و شائستگی پیدا ہو۔ عقل و دانش کو جلا ملے۔ سیرت و کردار کی تعمیر ہو چھوٹوں میں بڑوں کا احترام پیدا ہو اور بڑے چھوٹوں پر شفقت و محبت سے پیش آئیں ۔

مزید پڑھیں >>

یورپ کی علمی چوریاں اور ان کی مختصر تاریخ

حقیقت یہ ہے کہ اسلامی سائنس کی تاریخ کا بہت سا حصہ اور سائنس کی کئی مشہور ایجادات اور دریافتیں ایسی ہیں جن کو یورپ سے منسوب کر دیا گیا ہے اور آج لبرل سیکولر طبقہ یورپ کے گن گاتے نہیں تھکتا۔ یہ یورپ کی طرف سے اسلامی سائنسی علم،نظریات، ایجادات اور چوریوں کی مختصر تاریخ ہے اور یہ تاریخ کا وہ حجام ہے جس میں نیوٹن،گلیلیو، اینٹونیو لیوائزے اور کوپرنیکس سمیت  یورپ کی ابتدائی تاریخ کے تمام سائنسدان ننگے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

لڑکیوں کی تعلیم:  مشکلات، چیلنجیز اور حل

آج اگر کوئی غیر مسلم لڑکا یا لڑکی اسلام کو صحیح سمجھ کر اس کو حق جان کر اسلام مذہب قبول کرے تو اس کو بھی ہراساں کیا جاتاہے اور گھر واپسی پر مجبور کیا جاتاہے اور اس کے دفاع میں کوئی مسلم جماعت اور تحریک سامنے نہیں آتی ہے اور نہ ہی حقوق انسانی کی کمیشن، اور حقوق نسواں کی تحریک بیدار ہوتی ہے ہادیہ کی مثال موجود ہے جس نے اسلام کو سمجھ کر اور حق جان کر قبول کیا آج اسے پریشان کیا جا رہا ہے، اس کے عزم و استقامت کو سلام کرنا چاہیے کہ غیر مسلم تنظیموں اور اس کے ماں باپ کی تمام تر کوششوں کے بعد بھی وہ اسلام پر ڈٹی ہوئی ہے، لیکن ایک مایوس کن پہلو بھی ہے کہ ہادیہ کا کیس صرف اس کا شوہر لڑ رہا ہے میں سمجھتا ہوں کہ مسلم تنظیموں کو اس سلسلے میں آگے آنا چاہیے، جمعیۃ علماء جو دہشت گردی کے الزام میں گرفتار نوجوانوں کا کیس لڑتی ہے اس طرح کے بھی کیس لڑنے چاہیے۔

مزید پڑھیں >>

کتاب ’طلبہ کے تین دشمن‘ کی رسم رونمائی

 وقت گذرنے کے ساتھ اردوزبان جوکئی شعبوں پرمحیطہ ہواکرتی تھی آج وہ سکڑ کر شعر وسخن تک ہی محدود ہوکر رہ گئی۔ آخر اس صورتحال کا ذمہ دار کون ہے۔جب ہم اس اسباب وعلل کا جواز تلاش کرنے کی کوشش کرتے ہیں تو اس کے ذمہ دارہم خود نظرآتے ہیں کیونکہ ہم نے مذہب اسلام میں جواعلیٰ وارفع تعلیم بالخصوص علم کے حوالے سے ہمیں بتلائی گئی تھیں ہم نے اسے روگردانی کی۔ جس کی وجہ سے آج ملت اسلامیہ تعلیمی طورپرپسماندگی کا شکار ہوکر رہ گئی ہے مگران ناگفتہ بہ حالت میں بھی ایسے کچھ جری حضرات ہمیں نظرآتے ہیں جواردوکوصرف شعروسخن کے تناظرمیں دیکھنانہیں چاہتے بلکہ اس کو ایک علمی زبان کے طورپرفروغ دینا چاہتے ہیں اور وقتاً فوقتاً اس کامظاہرہ بھی کرتے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

درسِ اخلاق

اخلاق کا پوری زندگی پر اثر پڑتاہے۔ اس کی اہمیت کے مختلف پہلوہیں۔ قرآن وحدیث میں ان کی نشان دہی کی گئی ہے۔ اعلیٰ اخلاق و کردار کی فضیلت بیان ہوئی ہے اور اہل ایمان کو ان پر عمل کی ترغیب دی گئی ہے اور بتایاگیاہے کہ مومن انتہائی مہذب اور شائستہ ہوتاہے، دیانت دار اور امانت دار ہوتا ہے،کذب بیانی اور دروغ گوئی سے اس کی زبان آلودہ نہیں ہوتی۔ وہ کسی کے ساتھ مکر و فریب اور دغابازی نہیں کرتا،متوضع اور خاک سار ہوتاہے، نخوت اور گھمنڈ کا مظاہرہ نہیں کرتا، چھوٹوں سے شفقت اور بڑوں سے احترام سے پیش آتاہے، مظلوموں کی داد رسی کرتاہے۔ بیوی، بچوں، قرابت داروں اور پڑوسیوں کے حقوق اداکرتاہے۔

مزید پڑھیں >>

بچوں کی نفسیاتی تربیت

اگر ہم بچے کی ذہنی تربیت پر ان تین ماحولوں کی فیصد نکالنا چاہیں تو یقینا بچے کی ستر فیصد ذہنی و نفسیاتی تربیت گھر کے ماحول سے ہوتی ہے۔ اگر گھر میں والدین نماز ادا کرنے والے ہوں گے تو وہ بچہ بغیر سوال کئے اپنے والد کے ساتھ کھڑا ہو گا اور دیکھا دیکھی وہ سب کرنے کی کوشش کرے گا جو اس کا والد کرے گا۔ اگر والدین یا گھر کے ماحول میں گالی دینا کوئی عیب نہ ہو تو بچہ بھی ضرور گالی دے گا۔ اگر بچے کے سامنے ہر وقت گانے اور ناچ لگا رکھیں گے تو وہ بچہ چند دن کے بعد ہی گانے بھی گنگنائے گا اور ناچنے بھی لگے گا لیکن اس کے برعکس اگر گھر میں تلاوت قرآن کریم ہوتی ہو تو وہ بچہ نفسیاتی طور پر خود قرآن پڑھنے کا شوق رکھے گا۔

مزید پڑھیں >>

لکھنے کا فن

     پس ایک قلم کار کے لیے یہ ضروری ہے کہ وہ داخلی جوش (ایسی ذہنی ونفسیاتی کیفیت جو ایک قلم کار کو لکھنے کے لیے انگیخت کرے)سے بھی بہرہ مند ہو؛تاکہ وہ اسے کسی (سادہ یا مشکل)فکر وخیال سے ہم آہنگ کرکے ایسا فن پارہ وجود میں لاسکے، جو اس کے اپنے اسلوب، سوچ اور ذات کی نمایندگی کرتا ہویابالفاظِ دگر جو اس کی اپنی کاغذی تصویر ہو، کسی لکھاری کے اندر ایسا داخلی جوش تبھی پایاجاتا ہے، جب وہ ایک مخصوص نفسیاتی کیفیت سے بہرہ مندہو، البتہ اس کیفیت کی کوئی متعین صورت نہیں ہوتی؛بلکہ کبھی یہ خوشی، کبھی رنج، کبھی امیدورجا تو کبھی ناامیدی و مایوسی کی حالت میں بھی پائی جاسکتی ہے۔

مزید پڑھیں >>

عربی: اک زندہ و پائندہ زباں

 عربی زبان اپنی وسعت، جامعیت اور آفاقیت کی وجہ سے دنیا کی چھ بڑی زبانوں میں شمار کی جاتی ہے۔ اس کی قدامت و پختگی،طرز و انداز کی شیرینی، استعارات کی رنگینی، گرامر (صرف ونحو) کی ہمہ گیری اور ان سب سے بڑھ کر خدا کے آخری کلام کی ترجمانی و نمائندگی اسے دنیا کی تمام زبانوں سے ممتاز کردیتی ہے۔

مزید پڑھیں >>

تعلیم کے تیزاب میں ڈال اس کی خودی کو

تعلیم کے مقاصدمیں طلبا کی ترقی شامل ہے۔ مذہبی، سماجی، اخلاقی، معاشی وغیرہ ترقی کے لئے تعلیم ہی ذمے دار اور اہم کردار ادا کرتی ہے۔ علم انسان کو انسانیت کا سبق سکھاتا ہے۔ تہذیب،تمیز اور شرافت، حق و باطل میں میں تمیز، صراط المستقیم پر چلنا، سلیقہ اور شعور وغیرہ تمام اخلاقی اقدار بہترین تعلیم کی شکر گزار ہیں۔

مزید پڑھیں >>

مستقبل کی دنیا اور بچوں کی تربیت

بچوں کی تربیت مشکل ترین اور صبر آزما کاموں میں سے ایک کام ہے۔ ہمارے ہاں جیسا کہ ہر شعبہ تنزلی کا شکار ہے وہی معاشرتی اقدار بھی تباہی کے دہانے پر کھڑی ہیں۔ چند سال پہلے تک ہر کام بغیر تربیت محض ڈگری کی بنیاد پر کیا جاتا تھا لیکن اب اس حوالے سے تبدیلی آرہی ہے اور ہر شعبے میں تربیت اور ٹریننگ کو ضروری سمجھا جارہا ہے۔ خاص طور پر اساتذہ کی تربیت کرنا نہایت ہی ضروری ہے امر ہے۔

مزید پڑھیں >>