کیا ہو سکا کسی سے مداوا سکوت کا

ذیشان الہی ٹانڈوی کیا ہو سکا کسی سے مداوا سکوت کا شہرِ صدا بنا ہے خرابہ سکوت کا کیا کیا نہ دھیان میں رہی آواز کی ترنگ جب کھینچنے لگا ہوں میں نقشہ سکوت کا گونگے لبوں نے راز وہ افشا کئے کہ بس ہونے لگا ہےجب بھی خلاصہ سکوت کا نکلا یوں…