متفرقات

بیڈ گورننس اور بد ترین کرپشن کی رپورٹس

ٹرانسپیرنسی انٹرنیشنل کی ایک رپورٹ دیکھی کہ کرپشن، ٹیکس چوری اور بیڈ گورننس کے ضمن میں 2008ء سے 2013ء تک 9.5ٹریلین روپے ( تقریباً 9.4 ارب امریکی ڈالر) ضائع کر چکی۔ 9.5ٹریلین یعنی 95کھرب روپے پاکستانی معیشت کیلئے کتنی بڑی رقم ہے جو صرف پانچ سال میں چوری ہوئی، اور تقریباً اتنی ہی رقم ملک کے بااثر اور وڈیرے حکومت سے قرض لے کراور پھر مظلوم و لاچار بن کے معاف کرو ا چکے۔

مزید پڑھیں >>

شراب و منشیات: سماجی ناسور!

موجودہ حالات میں ضروری ہے کہ حکومتی و غیر حکومتی سطح پر بھی اُسی طریقہ تدریج کو اختیار کیا جائے۔ امید ہے اس کے بہتر نتائج اخذ ہوں گے۔ ساتھ ہی اس بات کی بھی کوشش کی جانی چاہیے کہ ان کوششوں کے درمیان ربط ہو نیز ایک دوسرے کا تعاون لینے اور دینے کی پالیسی اختیار کی جائے۔ جو لوگ اس سماجی برائی کے خاتمہ کے لیے کوشاں ہوں انہیں اِسی پس منظر میں سعی و جہد کرنی چاہیے۔

مزید پڑھیں >>

جہیز لینے اور بارات لے جانے والوں کا سماجی بائیکاٹ ہونا چاہئے!

ضروری ہے تاکہ سماج میں امیر غریب کے درمیان جو بھیانک کھائی حائل ہے اس کا خاتمہ کیا جاسکے۔ راقمِ سطور کے پاس انگنت ڈھیروں ایسی مثالیں ہیں، جن کے گھروںمیں شادیاں اسلئے نہیں ہو رہی ہیں کہ ان کے پاس پیسے نہیں ہیں۔ اگر ہمارے معاشرے میں بارات اور جہیز جیسی لعنت کا رواج نہیں ہوتا تو کیا ان گھروں میں اب تک شادیاں نہی ہوتیں؟

مزید پڑھیں >>

اُمید میں بہار ہے!

 بیٹے کو اپنی ماں کی وہ باتیں یاد آئیں جو اس وقت اسے الٹا کر کے سنائی گئی تھیں کہ ’’تمہارا بیٹا بہت ہی ذہین وفطین ہے اور اس کی ذہانت کو چار چاند لگانے کے لیے کسی دوسرے اسکول کا انتخاب ضروری ہے، لہٰذا آپ اس کا داخلہ کسی اور اسکول میں کرائیں تاکہ وہ مزید اچھی طرح سے اپنی ذہانت میں اضافہ کر سکے۔

مزید پڑھیں >>

میں بہت مصروف انسان ہوں

جس طرح یہ خطرہ اکثرہوتاہے کہ پڑوس میں لگی ہوئی آپ کے گھرکوبھی متاثرکرسکتی ہے اسی طرح یہ خطرہ بھی اپنی جگہ برقراررہتاہے کہ غیر اہم کواہم کام ترجیح دینے کے منفی نتائج آج نہیں توکل نکلنے ہی والے ہیں اوراس کا خمیازہ اگرآپ نہیں توآپ کے بچوں اورآنے والی نسلوں کوتوملنے ہی والاہے کیوں کہ آپ بس ایک ہی جملے کی سلاخوں میں قید ہیں :’میں بہت مصروف انسان ہوں‘۔

مزید پڑھیں >>

ڈیجیٹل انڈیا میں ڈیجیٹل سموسہ

بھگتو کو ہر چیز ڈیجیٹل ہی نظر آتی ہے اور آپ اسکو سمجھا بھی نہیں سکتے. اگر آپ کہتے کہ بابو سموسہ ڈیجیٹل نہیں ہو سکتا تو وہ آپ پر اینٹی نیشنلسٹ کا الزام عائد کرتے ہوئے کہتا کہ جب گوبر کوہ نور ہیرا ہو سکتا ہے تو سموسہ ڈیجیٹل کیوں نہیں ہو سکتا چچا  کی بات میں بڑی گہرائی اور سچائی تھی کہ بھگتی کے آگے تعلیم بھی دم توڑ جاتی ہے  پڑھا لکھا انسان جاہل ہو جاتا ہے اور جاہل بھگوان ہو جاتا ہے چچا سے یہ کہتے ہوئے کہ دیس بدل رہا ہے

مزید پڑھیں >>

اجتماعی فساد کب اور کیسے برپا ہوتا ہے؟

جب علماء اور اولی الامر اپنے اصل فرض یعنی امر بالمعروف و نہی عن المنکر کو چھوڑ دیتے ہیں اور شر و فساد کے ساتھ رواداری برتنے لگتے ہیں تو گمراہی اور بداخلاقی قوم کے افراد میں پھیلنی شروع ہوجاتی ہے اور قوم کی غیرتِ ایمانی ضعیف ہوتی چلی جاتی ہے، یہاں تک کہ سارا اجتماعی ماحول فاسد ہوجاتا ہے۔ قومی زندگی کی فضا خیر و صلاح کیلئے نا مساعد اور شرو فساد کیلئے سازگار ہوجاتی ہے، لوگ نیکی سے بھاگتے ہیں اور بدی سے نفرت کرنے کے بجائے اس کی طرف کھینچنے لگتے ہیں ، اخلاقی قدریں الٹ جاتی ہیں ، عیب ہنر بن جاتے ہیں اور ہنر عیب، اس وقت گمراہیاں اور بداخلاقیاں خوب پھلتی پھولتی ہیں اور بھلائی کا کوئی بیج برگ و بار لانے کے قابل نہیں رہتا۔

مزید پڑھیں >>

یہ ہماری نوجوان نسل!

 معاشرہ میں ناسور کی طرح دن بہ دن پروان چڑھتی ہوئی برائیوں کی بنیاد یہی ہے۔یعنی ہم اپنی جڑوں سے اپنا تعلق منقطع کر کے کامیابی و کامرانی کی جستجو میں یوں اپنے آپ کو جھونک کر۔ اپنی زندگی کو اپنی ناقص سمجھ کے مطابق چلانے کی نا کام کوشش میں لگے ہوئے ہیں ۔یہ بھی بھلا بیٹھے ہیں کہ ہمارا وجود بھی انھیں بزرگوں کا صدقہ ہے۔

مزید پڑھیں >>

کرپشن کے خلاف جنگ لازمی

مسئلہ صرف یہ ہے کہ عوام کی نگہداشت اور اُن کے فلاح و بہبود کی ذمہ دارحکومتیں اپنے فرائض کی ادائگی کے بجائے اُنہیں لوٹنے کا کام کر رہی ہیں اور اُنہیں بے وقوف بنانے اور اُلجھائے رکھنے کے لیے اُن کے مذہبی جذبات  سے کھلواڑ کر رہی ہیں ۔ اور ’نان اِشوز ‘ کو اِشوع بنا کر ان کا استحصال کر رہی ہیں ۔   

مزید پڑھیں >>

یکم اکتوبر: معمّر اور سن رسیدہ حضرات کا عالمی دن

معمر افراد کسی بھی قوم کاسب سےقیمتی سرمایہ ہیں ؛جوحالات سےآگاہ وباخبر، جہاں دیدہ اور سرد وگرم چشیدہ ہوتےہیں اس طرح ان کی زندگی کے تجربات نوجوانوں کےلیے مشعل راہ اورخضرطریق ہوتےہیں، نشان منزل کی تعیین اور پرخاروادیوں میں رہنمائی کےلیےان ہی کی آراءسے استفادہ کیاجاتاہےنیزرزم وبزم، محفل وانجمن، گھر وخاندان اور ہرجگہ و ہرمقام میں ان کا وجود باجود خیر وسعادت کاباعث اوربرکت و کامیابی کا ذریعہ ہے۔

مزید پڑھیں >>