شخصیت کا ارتقا

سکون قلب نہیں تو کچھ بھی نہیں

اللہ نے جس بات کی تعلیم دی ہے وہ عین فطرت انسانی کے موافق اور مطابق ہے۔ اور جن چیزوں سے گریز کرنے کی تلقین کی وہ اس سے بچنا فطرت سلیم کی ضرورت ہے۔ سچ تو یہی ہے کہ ہم اور آپ اسلامی کلچر اسلامی تہذیب و ثقافت کے بغیر کسی دوسری چیز سے ذرہ برابر بھی سکون و اطمینان نہیں حاصل نہیں کر سکتے ہیں  چاہے سکون کی حصولیابی کے لئے کتنی ہی موج و مستی کر لی جائے چاہے کتنی ہی  ہنسی اور مزاق کی محفلوں میں شرکت کر لی جائے بجائے سکون کے غم اور رنج و الم ہی ملے گا۔

مزید پڑھیں >>

اس زمانے کا بڑا کیسے بنوں!

آج شخصی آزادی کے نام پر جوکچھ ہم نے اپنایا ہوا ہے وہ شخصی آزادی دنیا کی کوئی بھی تہذیب یا تعلیم یا فتہ معاشرہ پسند نہیں کرتا ہے۔ ترقی کے جو منازل ہم طے کرنا ہی ترقی سمجھتے ہیں وہ ہماری ناقص عقلی ہے کیونکہ وہ  دراصل انسانی تنزلی ہے.  ہمیں مادیت کی چکا چوند نے بلکل اندھا کردیا ہے اور ہم ترقی کے  اصل میں کیا معنی  ہیں  اسکو بھلا بیٹھے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

خود نمائی اور کرپشن کا ناسور

خود نمائی ایک نفسیاتی و روحانی بیماری ہے یہ افراد کو ریا کاری کی طرف بھی لے جاتی ہے۔ریا کاری گناہ ہے بلکہ یہ ایک ایسا عمل ہے جو تمام اعمال کو ضائع کرنے کا باعث بن جاتا ہے۔ خود نمائی اور ریا کاری میں بہت معمولی فرق ہے۔خود نمائی اپنی کسی خوبی، صلاحیت، دولت، عہدہ، اختیار، عمل و فعل اور مقام و مرتبت کو نمایاں کرنے کے لیے بڑھا چڑھا کر بیان کرنے کو کہتے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

شخصیتِ انسانی کا امتیاز

انسانی شخصیت  کے بارے میں غور کرنے والے اس امر پر تو متفق ہیں کہ انسان محض طبعی اور جسمانی وجود نہیں ہے، بلکہ اس کی شخصیت، مادّی سطح سے بالاتر واقع ہوئی ہے۔ البتہ اس امر میں اُن میں اختلاف ہے کہ انسانی وجود کے ان اعلیٰ اور بلند تر پہلوؤں کی صحیح تعبیر کیا ہے۔ انسان کی ماہیت کے بارے میں سوچنے والوں میں جو افراد، انکارِ غیب کا رجحان رکھتے ہیں وہ انسانی شخصیت کے طبعی اور مادّی پہلوؤں کے علاوہ عموماً  صرف یہ بات تسلیم کرتے ہیں کہ انسان غور وفکر اور تجزیے کی صلاحیت رکھتا ہے، ادراک و شعور کی لطیف قوتوں سے بہرہ ور ہے اور اس کے اندر جمالیاتی حس پائی جاتی ہے لیکن اس سطح سے آگے، وہ انسان کے اندر مادّی خصوصیات سے بالاتر، کسی وصف کی شناخت سے قاصر ہیں۔

مزید پڑھیں >>

منزل سے آگے بڑھ کر منزل تلاش کر

اسلام نے تحصیل علوم کو ایک تحریک کے طور پر اپنے متبعین پر لازم قرار دیا، یہاں تک کہ سب سے پہلی آیت جو غارِ حراء میں محمد  صلى الله عليه وسلم پر نازل ہوئی اس میں قرأت، علم، قلم کا بطور خاص ذکر فرمایاہے، بلکہ پڑھنے کو امر کے صیغہ ”اقراء“ کے ذریعہ واجب کردیا۔

مزید پڑھیں >>

اے انسان، کر خودی کی پہچان!

 واقعہ ایک انسان کے لیے عموماً اور مسلمان کے لیے خصوصا ًقابل غور ہے۔ جس دنیا کے لیے انسان دن و رات کھپا دیتا ہے وہ دنیا نہ تو دائمی ہے اور نہ ہی اس میں جمع کیا ہوا سازو سامان دائمی ہے۔ دراصل دنیا میں انسان چند روزہ مسافر ہے ۔

مزید پڑھیں >>

زبان کی لغویات

جتنے لوگ جہنم میں جائیں گے ان میں اکثریت ان لوگوں کی ہوگی جو اپنی زبان کے کرتوتوں کی وجہ سے جہنم میں جائیں گے مثلاً جھوٹ بول دیا، کسی کی عیب جوئی کر دی ، کسی کی چغلی کھا لی ، کسی کی غیبت کر دی ، کسی کادل دکھا دیا ،کسی کی بدگمانی کی، کسی کی تکلیف پر خوشی کا اظہار کیا وغیرہ۔

مزید پڑھیں >>

آپ اچھا آدمی بننا چاہتے ہیں یا بڑا؟

ہمیں چاہیے کہ ہم بڑاآدمی بننے کے بجائے اچھاآدمی بننے کی کوشش کریں اورجب ہم اچھے بن جائیں گے توخودبخوداللہ تعالیٰ ہمیں بڑابنادے گااورہمیں بڑابننے کے لیے سوسوجتن کرنے، منافقت کرنے، باطن کوچھپانے اورتکلف کے ساتھ زندگی گزارنے کی ضرورت نہیں پڑے گی۔  یادرکھیے، بڑاآدمی عموماًتکلف کے ساتھ جیتاہے جب کہ اچھاآدمی فطری زندگی کے مزے لیتاہے۔ 

مزید پڑھیں >>

‘مواصلاتی مہارات کمیونکیشن اسکلز’ کا رسم اجراء

ٹمکور، کرناٹک ،ایچ ایم ا یس یونانی میڈیکل کالج کے سالانہ تقریبات کے موقع پر کتاب ’’مواصلاتی مہارات برائے بی یو ایم ایس طلباء ‘‘(Communication Skills for B.U.M.S., Students) کی رسم اجراء عمل میں آیا۔ اس کتاب کے مصنف جناب سید نثار احمد (احمد نثارؔ) اور ناشر جناب ڈاکٹر ذاکر حسین صاحب ہیں ۔

مزید پڑھیں >>