ڈاکٹر محمد مرسیؒ کا حراستی قتل: عالم اسلام خاموش کیوں؟

ی الوقت ہم ان کھلی آنکھوں سے دیکھ رہے ہیں کہ کس طرح عالمی سطح پر اسلام پسندوں کو کُچلا جا رہا ہے۔ کبھی بنگلہ دیش میں نام نہاد ٹربونل بنا کر مخصوص جماعتِ مومنین کو تختہ دار پر لٹکایا جارہا ہے تو کبھی مصر میں نبی ﷺ کے محبوں کو بڑی ہی بے دردی…

دو مہینے کی بیوہ عروس ہماری طرف دیکھ رہی ہے

دوبارہ وزیراعظم بننے کے بعد سینٹرل ہال میں مودی جی کی تقریر سے اُمید جاگی تھی کہ شاید حالات کچھ بدلیں گے لیکن لوک سبھا اور راجیہ سبھا میں کی گئی دونوں تقریروں سے ہر اُمید ختم ہوگئی اور اب ہر شہر کے مسلمانوں کو ہر ہنگامی ضرورت کا سامنا کرنے…

کٹھوعہ رسانہ کیس کے وکیل مبین فاروقی کے خلاف مقدمہ 

مبین فاروقی کے لائیو پیغام سے یہ صاف طور سے عیا ں ہو رہا ہے کہ سیاستداں ہے جو سارے فتنہ و فساد کی جڑ ہیں ۔ ماب لنچنگ، ظلم و جبر اورمخصوص نظریئے کی تکمیل سب سیاستدانوں کی کارستانیاں ہیں ۔ سیاست دان یہ ہر گز نہیں چاہتے کہ اِ س ملک کے لوگوں…

ذرا نزدیک تو آ یار میرے

عبدالکریم شاد ذرا نزدیک تو آ یار میرے کھلیں گے تجھ پہ سب اسرار میرے ... وہ کہتا ہے دعا کافی نہیں ہے دوا بھی چاہیے بیمار میرے ... مری بنیاد میں کچھ نقص تو ہے گرے جو گنبد و مینار میرے ... تمھی اے دشمنو! آئینہ لاؤ تکلف کر رہے ہیں…

بیٹی زائرہ! نئی زندگی مبارک ہو

تمھارا فیصلہ بالکل درست ہے۔ تمھیں نئی زندگی مبارک ہو۔ تم نے محسوس کیا کہ تمھارا ایمان اور تمھارا اپنے رب سے رشتہ کم زور ہورہا ہے، اس لیے تم نے اپنے رب کی طرف پلٹنے کا ارادہ کیا۔ تمھارا یہ ارادہ بہت مبارک ہے۔ ندامت کے آنسو تمام خطاؤں اور…

‘آویدن،  نویدن اور پھر دنادن’ کا پر تشدد رحجان

انتظامیہ کی یہ سہل پسندی  اور عافیت کوشی تشدد کے رحجان کی آبیاری کررہی ہے۔ ان کو خوابِ غفلت سے جگاکر اپنے فرضِ منصبی کی ادائیگی پر آمادہ کرنا عدم تشدد کو پروان چڑھانے اور مہذب پرامن معاشرہ قائم کرنے کے لیے ضروری ہے۔  

نصرت جہاں: ہنگامہ ہے کیوں برپا

سیندور اور ساڑی مشرقی اترپردیش بہار جهارکهنڈ بنگال آسام اور بنگلہ دیش کی شادی شدہ  خواتین کا پسندیدہ لباس اور رسم تها لیکن جیسے جیسے بیداری آتی گئی ساڑی اور سیندور کا استعمال کم ہوتا جا رہا ہے. جنوبی ہند میں بهی شرٹ اور اسکرٹ یا ہاف ساڑی…

عالمگیریت کا چیلنج!

بیسویں صدی کا آخری نصف نقطہ عروج تھا، سائنس و ٹیکنالوجی کے انقلاب نے کرہ ارض کو یکسر تبدیل کر دیا، دنیا وہ نہیں رہی جیسی کبھی تھی، دسویں صدی کا کوئی انسان پندرویں صدی میں زندہ ہوتا تو کچھ ذیادہ حیران نہ ہوتا لیکن پندرویں صدی کا انسان…

مدارس کی چہار دیواری میں اسلام کا نفاذ کیجیے

مدارس اسلامیہ دینی قلعے ہیں۔ انھیں دینی اعتبار سے بہت مضبوط ہونا چاہیئے۔ جتنا زیادہ اسلامی نظام اور تعلیم وتربیت میں یہ مدارس اکمل ہوں گے اتنا ہی ان کے پروردہ طلبہ میں عملی پختگی پیدا ہوگی اور قوم و عوام کے سامنے ثابت قدمی کے ساتھ اسلام کو…
Close Bitnami banner
Bitnami