عادل فراز 

عادل فراز 

صارفی نظام، معاشی زبوں حالی اور انسانی نفسیات

اگر ہم تازہ اعدادوشمار پر نظر ڈالیں جو سرمایہ دارانہ نظام کے دن بہ دن ارتقاء اور صارف کی معاشی تنزلی پر مبنی ہیں۔ ان اعدادو شمار کے مطابق سرمایہ دار کے سرمایہ میں اسی سسٹم کی بنیاد پر اضافہ ہوتا جارہاہے اور صارف معاشی بدحالی کا شکار اس لئے ہے کہ وہ اس سسٹم پر اعتبار کرتے ہوئے اپنی جمع پونچی کو خرچ کرنے میں بھی دریغ نہیں کرتا۔ گویا صارف کوریقینی کے گرداب میں الجھا ہوا ہے۔ اسے جو بارور کرادیا جاتاہے وہ بارورکرلیتا ہے۔ یہ صورتحال صارفی نظام کے لئے بہتر ہوسکتی ہے مگر صارف کے لئے خطرناک ترین صورتحال ہے۔

مزید پڑھیں >>

فطری دوستی یعنی اسلام دشمنی 

میڈیا بھی نتین یاہو کے دورہ کو تاریخی دورہ بنانے میں اہم کردار ادا کررہا تھا کیونکہ بی جے پی نواز میڈیا مستقبل کے خطروں سے آشنا ہوتے ہوئے بھی برسراقتدار جماعت کی ملک مخالف پالیسیوں سے چشم پوشی کررہاہے کیونکہ سبکے دہن پر چاندی اور سونے کی مہریں لگادی گئی ہیں ۔ ہندوستانی میڈیا نے فلسطین میں اسرائیلی جارحیت اور عالمی سطح پر موجود دہشت گردی میں اسکے کردار پر بات تک نہیں کی اسکے برعکس نئی پالیسی کے تحت فلسطین کے کردار کو ہی مشکوک کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

مزید پڑھیں >>

ایران میں خانہ جنگی استعماریت کی ایک ناکام کوشش

استعماری طاقتیں ہر محاذ پرمسلسل ایرانی قوم کے عزائم اور انکی جوانمردی کے سامنے گھٹنے ٹیکتی آئی ہیں۔ فلسطین کا دیرینہ مسئلہ ہو یا پھر یمن، شام، لبنان اور عراق کی جنگ میں انکی ناکامی کا طویل سلسلہ ہو ہر محاذ پر ایرانی حکومت کی منصوبہ بندیوں نے استعماری سازشوں کو شکست دی ہے۔ ظاہر ہے زخم کھایا ہوا دشمن ہمیشہ موقع کی تاک میں رہتاہے۔ یہ موقع دشمن کے ہاتھ لگا بھی مگر ایک بار پھر ایرانی قوم کے عزائم اور داخلی پالیسی سازوں نے انہیں ناکام بنادیا۔ حالیہ دنوں میں ایران میں ہونے والے تمام تر مظاہروں کو دشمن نے اپنے اہداف کے حصول کا ذریعہ بنانے کی کوشش کی مگر ناکام رہے۔

مزید پڑھیں >>

شریعت میں مداخلت کا آغاز

مسلم رہنما اور ادارے بھی حکومت کو یہ سمجھانے میں ناکام رہے کہ مسلم پرسنل لا ء کی اہمیت کیاہے اور اسکا اصل مآخذ کیاہے۔ حکومت یہ سمجھ رہی ہے کہ طلاق ایک سماجی قانون ہے جسے مولوی ملائوں نے آپسی رضامندی کے بعد بناکر مسلم سماج پر تھوپ دیاہے۔ یہاں سوال یہ نہیں ہے کہ تین طلاق کا مسئلہ کب اور کہاں سے وجود میں آیا۔

مزید پڑھیں >>

مسلمانوں کا عدم اتحاد اور انتفاضۂ القدس

ڈونالڈ ٹرمپ نے عالم اسلام کے خلاف اپنے ارادوں کا اظہار کردیا ہے مگر دنیا ابھی تک عالم اسلام کے باہمی ردعمل کی منتظر ہے۔ ردعمل ضرور سامنے آیاہے مگر اس رد عمل میں اتحاد کی کمی ہے۔ باہمی ردعمل کا فقدان سخت ردعمل اور احتجاجات کے تسلسل کی اہمیت کو بھی ختم کردے گا۔ در حقیقت ٹرمپ کا یہ بیان عالم اسلام کے خلاف نئی جنگ کا اعلان نامہ ہے۔اگر اب بھی مسلمان انکی سازشوں اور منصوبوں کو نہ سمجھنے کی اداکاری کرینگے تو بڑا نقصان اٹھائیں گے۔

مزید پڑھیں >>

انتہا پسندی کی راہ پر معاشرہ 

ہندوستان کا موجودہ سماج تیزی سے شدت پسندی اور مذہبی جنون کی طرف بڑھ رہاہے۔ ایسا سماج جہاں کوئی بھی محفوظ نہیں ہے۔ خواہ وہ سیاست مدار ہو یا مذہبی مقدس افراد۔ہر طرف انتہا پسندی کا عروج ہے۔ ایسا سماج وجود میں آچکاہے جو اپنے نظریات و افکار کو جبراَ تسلیم کرانے یا اپنی سوچ کے خلاف سوچنے والے افراد کو زندہ رہنے کا حق نہیں دیتے۔ اسکی بنیادی وجہ ہمارے معاشرہ میں ’’عدم برداشت ‘‘ کا بڑھتا ہوا رجحان رواداری کاختم ہوتا ہوا ماحول ہے۔

مزید پڑھیں >>

مدارس کا تعلیمی بحران: موروثی نظام اورہماری ذمہ داریاں

مدارس کو جدید نظام تعلیم اور عصری تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا بیحد ضروری ہے۔ جدید نظام تعلیم سے مراد مدارس میں انگریزی اور ماڈرن ہسٹری کی تعلیم مراد نہیں ہے بلکہ وہ طریقۂ تدریس مراد ہے جو آج دنیا بھر میں رائج ہے۔ کیا ہمارے مدارس میں ٹرینڈ ٹیچرز ہوتے ہیں۔ ڈنڈے کا خوف دلاکر طلباء کو اپنی جہالت کا قائل کرنا الگ ہے مگر انہیں اپنے علم و تجربہ کی بنیاد مطمئن کرنا آسان نہیں ہے۔ اگر طلباء دوران تعلیم ہی احساس کمتری کا شکار ہوجائیں گے تو پھر قوم ان سے کیا توقعات وابستہ رکھے گی۔

مزید پڑھیں >>

مغرب میں آزادیٔ اظہار کاتصور اور اسلام

اسلام آزادیٔ اظہار کے خلاف ہے اور اسکا قانون فرد کی آزادی پر قدغن لگاتاہے خلاف عقل اور مبنی بر عصبیت ہے۔ جس طرح دنیا کا ہر قانون فرد اور معاشرہ کی آزادی کے لئے قانون وضع کرتاہے تاکہ امن عامہ برقرار رہے اسی طرح اسلام بھی آزادی کا اپنا تصور پیش کرتاہے تاکہ معاشرہ فساد سے محفوظ رہے۔

مزید پڑھیں >>

روہنگیائی مسلمانوں کی نسل کشی پر سعودی اتحاد کی مجرمانہ خاموشی

افسوسناک صورتحال یہ ہے کہ آج بھی سعودی عرب کی اندھی تقلید جاری ہے ۔کسی ایک مسلم تنظیم اور سیاسی ملائوں نے یہ سوال نہیں اٹھایا کہ آخر سعودی عرب جو خود کو اسلام کا ٹھیکدار سمجھتاہے اس نے مظلوم روہنگیائی مسلمانوں کی مدد میں پیش رفت کیوں نہیں کی؟ اگر مسلمان یہ سوال کرنے کی جرآت نہیں رکھتاہے تو اسے مظلوم روہنگیائی مسلمانوں کے لئے احتجاج کرنے کا بھی کوئ حق نہیں ہے ۔

مزید پڑھیں >>

گاندھی کے قاتل ہی گوری لنکیش کے قاتل ہیں

حال ہی میں گاندھی کے قاتلوں نے نریندر دامولکر،کووند پانسرے اور ایم ایم کلکرنی جیسے بیباک افراد کو موت کے گھاٹ اتاردیا۔ صحافیوں کی سرکوبی اور قتل کا سلسلہ جاری ہے۔دلتوں اور اقلیتوں کو دہشت زدہ کرنے کے لئے مختلف ہتھکنڈے آزمائے جارہے ہیں۔ مذہبی جنون کو ہوا دی جارہی ہے۔ قانون کےنام پر مسلح بے چہرہ بھیڑ سڑکوں اور گلیوں میں دھڑا دھڑ فیصلے کرتی گھوم رہی ہے۔

مزید پڑھیں >>