آس پاس

ڈکٹیٹر پرویز مشرف کی واپسی

کل کیا ہو کس نے جانا مگر ملکی منظر نامہ اس وقت تیزی سے تبدیل ہو رہا ہے۔ ڈاکٹر طاہرالقادری کو رانا ثنا اللہ کا استعفی مل جائیگا، سینٹ الیکشن کو سبوتاژ نہیں کیا جا سکے گا بروقت ہو جائینگے، صوبائی اسمبلیاں بھی تحلیل نہیں کی جائینگی، غیر جمہوری طاقتیں جوڑ توڑ کرینگی مگر خاطرخواہ نتائج نہیں مل پائینگے اور سب سے بڑی خبر یہی ہوگی کہ ڈکٹیٹر پرویز مشرف کی مارچ تک واپسی ہوجائیگی۔

مزید پڑھیں >>

آؤ بیٹیاں جلا دیں!

 ننھی زینب بیٹی پرظلم ستم کی انتہاء اورپھردوشہریوں کاپولیس کے ہاتھوں قتل ایسادردناک سانحہ ہے جس کے بعد تادم تحریردل خون کی آنسورورہاہے۔ موجودہ نظام سے انصاف ملنے کی کوئی اُمید نظر نہیں آتی، ان حالات میں جناب ’منصور مانی‘صاحب نے جن الفاظ میں عوامی جذبات کی ترجمانی کی ہے ان میں دکھ،درد،تکلیف کے ساتھ حصول انصاف کیلئے عملی جدوجہدکیلئے قومی ضمیر کو جھنجھوڑ کے رکھ دیا ہے۔

مزید پڑھیں >>

سوری زینب (چیف جسٹس، آرمی چیف، پاکستان کی عوام کے نام گزارش)

سوری زینب! اسلامی جمہوریہ پاکستان میں تمہاری جان اور عزت نہ بچ سکی اور شاید ہم اکیس کروڑ کا ہجوم تمہیں بھی دو چار دن میں بھول کر کسی نئی زینب کا انتظار کرے گا۔ پھر کسی کے گھر صفِ ماتم بچھے گی، کسی کی زینب کوڑے پر قتل ہوئی ملے گی، نوٹس لیا جائے گا، جے آئی ٹی بنے گی، کوئی ایک آدھا معطل ہو گا اور پھر ہم ایک نئی زینب کا انتظار کریں گے۔ کوئی احتجاج کرے گا کہ یہ قصور اسلام کا ہے کوئی کہے گا کہ لبرل ازم کا ہے، کسی کے نذدیک یہ عورت کے لباس کا قصور ہے تو کوئی وزیر صاحب بیان دیں گے یہ تو ہوتا رہتا ہے، اس سے تحفظ والدین کی ذمہ داری ہے۔ لیکن تمہیں انصاف کسی ایک سے بھی نہیں ملے گا۔ سوری زینب !!!

مزید پڑھیں >>

خلیجی ممالک میں محنت کشوں کے شب و روز

پردیس میں ہمارے پردیسی بھائی آپس میں ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں۔ ان سب کی پہچان صرف ان کا ملک یعنی پاکستان ہوتا ہے۔ ان کے غم بھی ساجھے ہوتے ہیں اور ان کی خوشیاں بھی ساجھی ہوتی ہیں اگرچہ خوشیاں وہاں کم ہی میسر آتی ہیں۔ ان کے کام کرنے کے اوقات اتنے طویل اور کٹھن ہوتے ہیں کہ کام کے بعد ان کو آرام کے لئے بھی بس اتنا ہی وقت ملتا ہے کہ بمشکل کل کے لئے تازہ دم ہو کر پھر سے محنت مزدوری پر جا سکیں۔ 

مزید پڑھیں >>

کراچی کا فیصلہ ووٹ کریں گے!

ملک کے سیاسی حالات اور کراچی کی سڑکیں آپسی بہت مماثلت رکھتے ہیں ذرا گاڑی چلتی ہے اور اچانک سے ایک مختصر مگر پر اثر گڑھا نمودارہوئے بغیر ہی گاڑی کے پہیوں کو پڑ جاتا ہے، جو اکثر کسی نا کسی نوعیت کے حادثے کا باعث بنتا ہے۔ ایسا معلوم ہوتا ہے کہ جیسے کسی نے بیچ سڑک میں بیٹھ کر باقاعدہ ہتھوڑی چھینی کی مدد سے اسے کھودا ہو۔ پاکستان کو خارجی اور داخلی مسائل گھیرے ہی رکھتے ہیں، ابھی ایک مسلۂ سے نکل نہیں پاتا کہ دوسرا کوئی گھمبیر مسلۂ اچانک سے سامنے آجاتا ہے بلکل کراچی کی سڑکوں پر پڑے کھڈوں کی طرح۔ جو یہ سمجھانے کیلئے کافی ہے کہ ہمارے ملک کی انتظامہ بغیر کسی موثر حکمت عملی کے تحت اپنی سرگرمیاں سرانجام دے رہی ہے اور سوائے اللہ توکل کے کوئی اثرا سجھائی نہیں دیتا۔ 

مزید پڑھیں >>

ہوشیار پاکستانی اور بیوقوف امریکی؟

ہمیں کسی بھی ملک کو جواب دینا ہوتا ہے تو ہم بہت مہذب اور عالمی اصولوں کی پابندی کرتے ہوئے، ماہرین امور خارجہ اور خزانہ سے ملاقاتیں کرتیں ہیں اور پھر کہیں جاکہ جب معاملہ کسی حد تک خود ہی خول میں چلا جاتا ہے تو اعلامیہ جاری کروادیتے ہیں۔ جو اتنا ڈپلومیٹک (منافقانہ) ہوتا ہے کہ دنیا کو بھی تسلی ہوجاتی ہے کہ پاکستان کی قیادت کم از کم جذباتی ہاتھوں میں نہیں ہے۔ یوں تو پورا پاکستان امریکی صدر کو اپنی دانست میں گالیاں دے رہا ہے۔ ہم پاکستانی دنیا کی نظروں میں بہت طاقتوار اور منظم بنے ہوئے ہیں مگر ہمارے اندرونی حالات ہم ہی جانتے ہیں۔ ہم اگر اب بھی ایک قوم نہیں بنے تو ہماری آنکھوں کے سامنے ہمیں نیست و نابود کر دیا جائے گا۔ 

مزید پڑھیں >>

پاکستان نے انسانی حقوق کے خلاف ورزی کی! 

برسوں بعد کسی صورت جب ملاقات ہوئی بھی تو اہلیہ اور والدہ سے ملاقات کے دوران کلبھوشن اور ان کے درمیان شیشہ کی دیوار تھی۔ اگر انہیں ذاتی ملاقات کروانے میں دلچسپی نہیں تھی تو پاکستان حکومت کو اسلام آباد سے ایک ویڈیو کانفرنسنگ کا اہتمام کرنا چاہئے تھا۔ اب ضرورت اس بات کی ہے کہ انٹرنیشنل کورٹ آف جسٹس (بین الاقوامی عدالتِ انصاف) فوری طور پر کلبھوشن جادھو کی رہائی کیلئے پاکستان پر دباؤ بناۓ۔

مزید پڑھیں >>

آئندہ الیکشن کیسا ہوگا؟

 بات بالکل پکی ہے کہ پاکستانی مسلمانوں نے کبھی کسی مذہبی جماعت یامولوی کوووٹ نہیں دیئے۔ راقم یہ کہناچاہتاکہ اب بھی قوم کسی مذہبی جماعت یامولوی کوووٹ دینے کیلئے ہرگزتیارنہیں پر یہ اس کائنات کی سب سے بڑی حقیقت ہے کہ مسلمان رسول اللہ ﷺ کی محبت میں اپنی جانوں کے نذرانے پیش کرنے سے بھی نہیں گھبراتے اور موجودہ حالات چیخ چیخ کرکہہ رہے ہیں کہ آئندہ الیکشن میں مسلمان اپناووٹ کسی مذہبی جماعت یامولوی کونہیں بلکہ رسول اللہ ﷺ کے نام پردین اسلام کے حق میں ڈالیں گے۔

مزید پڑھیں >>

قائد اعظمؒ کے افکار اور موجودہ پاکستان کے حالات

’’قرآن مسلمانوں کا ضابطہ حیات ہے۔ اس میں مذہبی اور مجلسی، دیوانی اور فوجداری، عسکری اور تعزیری، معاشی اور معاشرتی سب شعبوں کے احکام موجود ہیں ۔ یہ مذہبی رسوم سے لے کر جسم کی صحت تک، جماعت کے حقوق سے لے کر فرد کے حقوق تک، اخلاق سے لے کر انسدادِ جرائم تک، زندگی میں سزا و جزا سے لے کر آخرت کی جزا و سزا تک غرض کہ ہر قول و فعل اور ہر حرکت پر مکمل احکام کا مجموعہ ہے۔ لہذا جب میں کہتا ہوں کہ مسلمان ایک قوم ہیں تو حیات اور مابعد حیات کے ہر معیار اور پیمانے کے مطابق کہتا ہوں ‘‘۔

مزید پڑھیں >>

ہم لوگ کتنے پیشہ ور ہیں؟

ہمارے جو ادارے ابھی تک قابل عمل ہیں اور ہم ان اداروں کو بچانا چاہتے ہیں تو ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہوگا کہ جلد سے جلد پیشہ ورانہ صلاحیتوں سے بھرپور افراد تعینات کریں تاکہ وہ اپنی کسی ذاتی خوشی یا تسکین کی خاطر ادارے کو تباہی کی جانب جانے سے روکیں اور ایسے ہی لوگ ان کالی بھیڑوں کی نشاندہی بھی کرسکتے ہیں جو ادارے کو تباہی کی جانب دھکیلنے میں مصروف عمل ہوتے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>