ہندوستان

کہاں چراغ جلائیں ہوا ہے چاروں طرف!

کروڑوں کان یہ سننے کے لئے لگے ہیں کہ پانچ محترم ججوں نے کیا فیصلہ کیا؟ اور فیصلہ متفقہ ہے یا پانچ میں اکثریت کے بل پر ہے۔ مسلم پرسنل لاء بورڈ کے ایک سکریٹری فضل الرحیم صاحب کے نام سے ایک اور حلف نامہ سپریم کورٹ میں داخل کیا گیا ہے جس میں جدید اور مثالی نکاح نامہ کا یقین دلایا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ نکاح پڑھانے والوں کو ایڈوائزری دی جائے گی کہ نکاح پڑھاتے وقت لڑکے اور لڑکی کو بتادیا جائے کہ طلاق ثلاثہ ناپسندیدہ فعل ہے۔

مزید پڑھیں >>

ہاشم پورہ سانحہ کی داستان اور مسلم لیڈر شپ!

ہاشم پورہ فرقہ وارانہ فساد اور مظفر نگر فساد میں بڑی مماثلت ہے دونوں ہی فساد ایکدم سے نہیں ہوئے بلکہ دونوں ہی کے لیے پہلے سے زمین ہموار کی گئی تھیں ۔ فساد سے سال دو سال قبل سے دونوں فرقوں میں تنائو بڑھنے لگا تھا ۔ ’’سالا پاکستانی‘‘ اور’’ دیش دروہی‘‘ جیسے القاب سے مسلمان نواز ے جانے لگے تھے ۔ کور چشم مسلم قیادت بھی اس کی بڑی ذمہ دار تھی جو بجائے حکمت کا راستہ اختیار کر نے کے اشتعال انگیز بیان دینا شروع کردیا تھا ۔

مزید پڑھیں >>

عدالت کا پہلا جرأت مندانہ فیصلہ!

یہ خبر تو بار بار آپ نے پڑھی ہوگی کہ 5 سال سے 20 سال تک جیل میں بند رکھ کر عدالت نے اس لئے باعزت بری کردیا کہ پولیس کوئی ثبوت اور کوئی ایسا گواہ پیش نہیں کرسکی جس سے یہ ثابت ہوجاتا کہ ملزم نے واقعی وہ جرم کیا ہے یا وہ جرائم کئے ہیں جن کی بناء پر اسے جیل میں رکھا گیا۔ لیکن یہ پہلی بار پڑھ رہے ہوں گے کہ ’’عدالت نے صوبائی حکومت کو ہدایت دی ہے کہ وہ ملزمین کی تعلیمی لیاقت کے اعتبار سے جتنے دن انہوں نے جیل کی صعوبت برداشت کی ہے، انہیں اس کا معاوضہ دیا جائے‘‘۔

مزید پڑھیں >>

پانی چاہیے یا ترقی؟ فیصلہ آپ کریں!

ندیوں کے جال سے مالا مال ہمارا ملک ہندوستان 23بڑی ندیوں گنگا ،جمنا، سرسوتی ، برہم پتر ،کاویری، ستلج، سورن ریکھا، ہگلی،جہلم ،راوی ،کرشنا،چمبل، سون بھدر، بوڑھی گنڈک، کوسی، گھاگھرا ،گومتی، بٹوا، دامودر سمیت 263ندیاں ہمارے ملک میں موجود ہیں ۔ اس کے باوجود آج مہاراشٹر، کرناٹک، تلنگانہ، ہریانہ ، اتر پردیش ، گجرات، آندھرا پردیش تقریباً آدھا ملک خشک سالی ،قحط سالی اور پانی کی بھیانک کمی سے تڑپ رہا ہے۔

مزید پڑھیں >>

طلاق زحمت نہیں رحمت ہے! (قسط اول)

عصری علوم کے حامل ہمارے نوجوانان جنہیں شرعی علوم سے کوئی وابستگی نہیں رہی، مغربی تہذیب کے وکلاء اور نام نہاد انسانی حقوق کے علمبرداروں کے کھوکھلے نعروں سے متاثر ہوکر مسلم پرسنل لاء جس کی بنیاد اسلامی شریعت پر ہے،پر نہ صرف تنقیدیں کر رہے ہیں بلکہ حکومت اور عدلیہ سے اس میں اصلاح کی مانگ بھی کر رہے ہیں ۔ انہیں اس بات کا بھی احساس نہیں کہ یہ معاملہ کتناحساس ہے اور اس کے نتائج کتنے سنگین نوعیت کے ہوں گے۔

مزید پڑھیں >>

سیاست، مخالفت اور علاء الدین کا چراغ!

یہ نیا سیاسی تجربہ ہے۔ مسلمانوں نے کبھی سوچا بھی نہیں ہوگا کہ ستربرسوں میں آر ایس ایس اور بی جے پی سے نفرت انہیں اس قدر مہنگی پڑ سکتی ہے۔ لیکن حل بھی اسی سیاسی منظر نامہ سے نکلے گا۔ کیسے؟ اس پر جذباتی ہو کر نہیں ، منطقی اور سیاسی پہلوئوں کو سامنے رکھ کر سوچنا ہوگا۔ آر ایس ایس اور مودی سے ملاقات کا عمل جاری رکھنا ہوگا۔ ابھی جس سیاسی دور اندیشی کی ضرورت ہے، مسلمانوں میں اس کی کمی ہے۔ اور کمی اس لیے کہ موجودہ سیاست نے ان کے آگے بڑھنے کے تمام راستے بند کردیے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

مسلمانوں کیلئے سہارنپور کا سبق! 

اگر آج دلتوں کو نشانہ بنانے کی تیاری کی جارہی ہے تو مسلمانوں کو ان کے ساتھ ہر صورت میں کھڑا ہونا چاہئے ۔گجرات میں تو مسلمانوں نے ایسا کیا ہے لیکن اور دوسری جگہ اس کی مثالیں دستیاب نہیں ہیں ۔اگر ہم اس میں کامیاب ہو گئے تو یقین جانئے کہ ہندوستان میں ہم آج بھی باوقار طریقے سے رہ سکتے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

خدا بخش لائبریری کو سازشوں سے کیسے بچایا جائے؟

ہندوستان کے وزیراعظم کے سامنے بہت کام ہیں مگرپارلیمنٹ کی عظیم الشان عمارت گر جائے تو اس کی دوبارہ تعمیر ممکن ہے لیکن خدابخش لائبریری کا علمی اثاثہ اگر ایک تل بھی ضائع ہوجائے تو اس کی بازآفرینی نا ممکن ہے۔ سیکڑوں ایسے مخطوطات ہیں جن کا دنیا میں کوئی دوسرانسخہ نہیں آخر انہیں ہم نہ بچائیں گےتو صبح قیامت خدا کے سامنے اوراپنے اسلاف کے روبرو شرمندہ ہوں گے۔ ہندوستان کی موجودہ حکومت اوروزیراعظم اتنے پڑھے لکھے ضرور ہیں جو خدا بخش کے کتب خانے کی قیمت کو خوب خوب سمجھتے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

یہ موسم بدل کیوں نہیں رہا؟

زندہ لوگ اگر ہمیشہ سماج اور سرکار کی تعریف میں تعریفوں اور قصیدوں کا استعمال کریں گے تو سرکار اور وہ سماج بالکل ٹھہر جائے گا کیوں کہ سرکار اور سماج دونوں کو چیلنجوں کی ضرورت ہوتی ہے اور اختلاف اور نا اتفاقی کے ذریعہ دونوں بہتر کرنے یا ہونے کا موقع دیتا ہے۔ اضطراب اور نا اتفاقی کی رمق اگر باقی نہ رہے تو سماج اور سرکار سرکار صرف خوبصورت خواب دیکھتا اور دکھاتا ہے اور ترقی کے راستے پر چلنے سے ہچکچاتا ہے۔

مزید پڑھیں >>

پی ایس آئی رزلٹ اور جاگتی اُمیدیں!

امسا ل پی ایس آئی امتحان کے نتائج دیکھ کر اندازہ ہوا کہ الحمداللہ ہمارے نوجوانوں میں اتنی قابلیت موجود ہے کہ وہ بھی اعلٰی سرکاری عہدوں پر فائز ہوسکتے ہیں ۔ ضرورت صرف ہمّت، خواہش، انتھک کوشش اور سخت محنت کی ہے۔ آج ہم نوجوان نسلمحنت، لگن، وقت کی پابندی، بہترین منصوبہ بندی اور اللہ تعالٰی کی ذاتِ اقدس پر توکّل اور یقین سے اُمّتِ مسلمہ کے تاریک دنوں میں اُمّید کی لہریں اور روشنی کی کرنیں بکھیر سکتے ہیں

مزید پڑھیں >>