ملی مسائل

ختم نبوت

ہر نبی اور ہر آسمانی کتاب نے اپنی امت کو اپنے بعد پیش آنے والے حالات کے بارے میں اطلاعات دی ہیں ۔ کتب آسمانی میں یہ اطلاعات بہت تفصیل سے بیان کی گئی ہیں ۔ گزشتہ مقدس کتب میں اگرچہ انسانوں نے اپنی طرف سے بہت سی تبدیلیاں کر دیں ، اپنی مرضی کی بہت سی نئی باتیں ڈال کر تو اپنی مرضی کے خلاف کی بہت سی باتیں نکال دیں لیکن اس کے باوجود بھی جہاں عقائد کی جلتی بجھتی حقیقتوں سے آج بھی گزشتہ صحائف کسی حد تک منور ہیں وہاں آخری نبی ﷺ اور قیامت کی پیشین گوئیاں بھی ان تمام کتب میں موجود ہے۔

مزید پڑھیں >>

اب بے قراری کی وجہ سمجھ سے باہر ہے

وشو ہندو پریشد نے بھی رام مندر کی تعمیر پر مصالحت کو بے معنیٰ قرار دیا ہے وی ایچ پی کے میڈیا انچارج نے وضاحت کے ساتھ کہا ہے کہ عدالت کو ثبوت چاہئے جو مندر کے حق میں اسے مل گئے ہیں ۔ جمعیۃ علماء ہند کے صدر مولانا ارشد میاں نے واضح الفاظ میں کہا ہے کہ مصالحت کی بنیاد پر ہم بابری مسجد کسی کو نہیں دے سکتے۔ مولانا نے فرمایا کہ ہمارا آئین پر پورا یقین ہے لہٰذا وہ جو بھی فیصلہ کرے گا ہم سرجھکاکر اسے تسلیم کرلیں گے۔

مزید پڑھیں >>

مدارس کا تعلیمی بحران: موروثی نظام اورہماری ذمہ داریاں

مدارس کو جدید نظام تعلیم اور عصری تقاضوں سے ہم آہنگ کرنا بیحد ضروری ہے۔ جدید نظام تعلیم سے مراد مدارس میں انگریزی اور ماڈرن ہسٹری کی تعلیم مراد نہیں ہے بلکہ وہ طریقۂ تدریس مراد ہے جو آج دنیا بھر میں رائج ہے۔ کیا ہمارے مدارس میں ٹرینڈ ٹیچرز ہوتے ہیں۔ ڈنڈے کا خوف دلاکر طلباء کو اپنی جہالت کا قائل کرنا الگ ہے مگر انہیں اپنے علم و تجربہ کی بنیاد مطمئن کرنا آسان نہیں ہے۔ اگر طلباء دوران تعلیم ہی احساس کمتری کا شکار ہوجائیں گے تو پھر قوم ان سے کیا توقعات وابستہ رکھے گی۔

مزید پڑھیں >>

آخر ہماری حالت کیوں نہیں سدھر رہی ہے؟

کلکتہ کے مسلمانوں کی جو تصویر بنگلہ و ہندی اخبارات اور بنگلہ نیوز چینلوں میں آئی ہے اسے دیکھ کر غیر مسلم بھائیوں نے یقینا یہی سوچا ہوگا کہ مسلمان خدمت خلق کے اداروں میں صدر اور سکریٹری بننے کیلئے اپنے بھائیوں کا سرقلم کرنے کیلئے تیار ہوجاتے ہیں ۔ فتنہ وفساد برپا کرتے ہیں تو پھر ان کا جب دوسروں سے سامنا ہوگا تو کیا کریں گے؟ اس واقعہ کے بعد راقم نے غیر مسلموں کے اداروں کا حال معلوم کرنا چاہا تو معلوم ہوا کہ اس قسم کی حرکتیں ان کے اداروں میں نہیں ہوتیں کہ ایک دوسرے کے دشمن بن جائیں اور پھر ایک دوسرے کے سامنے نہ آسکیں ۔

مزید پڑھیں >>

چاند کو گل کرو تو ہم جانیں!

ہمیں امید ہے کہ یہ بھارت کا آخری عہد سیاہ ہوگا انشا اللہ۔ نریندر شارون میلو سیوچ ہٹلر مودی کے 2019 میں دوبارہ وزیر اعظم بننے کے امکانات مسلسل کم ہوتے جارہے ہیں۔ اور بالفرض ان کی پارٹی سام دام دنڈ بھید کی تمام چانکیائی، فرعونی اور قارونی ’نیتیوں ‘ پر صد فی صد عمل کر کے دلی کے  راج سنگھاسن پر دوبارہ قابض بھی ہو گئی تو وہ اپنے  اُن  سبھی ادھورے کاموں کو پورا کرنے کی کوشش کرے گی جو با لآخر اُس کی  دائمی موت کے پروانے پر دستخط ثابت ہوں گے۔

مزید پڑھیں >>

فتنۂ شکیل بن حنیف اور علماء کی ذمہ داریاں

اس بات میں اب ادنی تردد کی گنجائش نہیں کہ یہ فتنوں اور آزمائشوں  کا دور ہے اور روئے زمین کا کوئی بھی گوشہ ان فتنوں سےمحفوظ نہیں ۔ ملت اسلامیہ پر سازشی فتنوں، گمراہ فرقوں  اور  باطل تحریکوں کی  چو طرفہ یلغار ہے، بدعقیدگی و بدعملی کا فتنہ،مادیت پسندی و نفس پرستی کا فتنہ، خدابیزاری اور دہریت کا فتنہ،تہذیبی زوال اور حیاباختگی کا فتنہ، اسلام دشمنی اور گروہ بندی کا فتنہ اور خود کو مہدی موعود اور مسیح ظاہر کرکے  مسلمانوں کا استحصال کرنے والےضمیر فروشوں کا فتنہ۔ 

مزید پڑھیں >>

اُف یہ مسلکی پھندے !

کہتے ہیں کہ تاریخ ہمیشہ خود کو دہراتی ہے، آج پھر وہی مذہبی جبر کا زمانہ لوٹ آیا ہے اور آج پھر اس کا جواب وہی ہے جو ماضی میں دیا جاچکا ہے، یعنی صبر اور اتحاد کے ساتھ خود کو مضبوط و مستحکم کرنے کا عمل، ہمارے درمیان مسلکی اختلافات اتحاد کی راہ کا کانٹا بنے ہوئے ہیں ہمیں ان کانٹے دارمسلکی جھاڑیوں کو اکھاڑ پھینکنا ہوگا ایک خدا ایک قرآن اور ایک نبی کے نام پر متحد ہوکر سارے گلے شکوؤں کو دور کرنا ہوگا، خود غرضیوں اور مصلحت پسندیوں سے پرے امن و اخوت کا پرچم بلند کرتے ہوئے امن و محبت  کے دریا بہانے ہوں گے، اس کے بغیر ہمارا ہر احتجاج ہر چیخ و پکار اور ہر کوشش صدابصحرا ہی ثابت ہوگی، آپ سن رہے ہیں نا۔

مزید پڑھیں >>

قومی حالت میں سدھار کا ایک حل

بحیثیت مسلمان ہمیں اس بات کایقین ہے کہ یہ دنیاہمارے لئے امتحان گاہ ہے، ہماراامتحان لینے کے لئے ہمیں اس دنیامیں بھیجاگیاہے، جب ہمارے امتحان کاوقت ختم ہوجائے گا تو ہمیں یہاں سے اٹھالیاجائے گا، پھرہماری کاپی کی چیکنگ ہوگی، اگرہماراجواب صحیح نکلا توہمیں فرسٹ کلاس سے کامیاب قراردے کر’’جنت‘‘ میں بھیج دیاجائے گا؛ لیکن اگرجواب صحیح نہیں نکلاتوہمیں ناکام قراردے کر’’جہنم‘‘ میں پھینک دیاجائے گا۔

مزید پڑھیں >>

راہ دکھا کر دم لیں گے ہم!

امریکہ و برطانیہ وغیرہ اصلاً صہیونی مملکتیں ہیں وہاں حکومت اوباما کی رہے یا ٹرمپ کی، کنزرویٹو ہوں یا لیبر والے اسرائل اور صہیونیت کے مفادات کی خلاف ورزی کوئی نہ کرتا ہے نہ کر سکتا ہے۔ اقوام متحدہ سے لے کر بین اقوامی تجارت تنظیم (ڈبلو ٹی او )تک جتنے بھی نام نہاد عالمی ادارے ہے سب کے سب بلا استثنا   صہیونی مفادات کے نگراں ادارے ہیں لیکن کوئی توجہ نہیں کرتا۔ اور متوجہ ہوتا بھی ہے تو یقین نہیں کرتا۔ ہم انہیں بتاتے ہیں سماجی انصاف اور امن کا قیام یرقانی و صہیونی قارونوں اور فرعونوں کے  موجودہ نظام  کے بس کی بات نہیں۔

مزید پڑھیں >>

یہاں تو معرکہ ہوگا! مقابلہ کیسا؟

بات چیت سے اب کچھ حل ہونے والا نہیں۔ جس طرح انہوں نے اپنی طاقت کا مظاہرہ کرتے ہوئے بابری مسجد کو شہید کیا تھا ٹھیک اسی طرح بنابھی سکتے ہیں۔ بقول سادھوی رتمبھرا مرکز میں مودی ہیں یوپی میں یوگی ہیں اوراس کے باجود اگر رام مندر تعمیر نہیں کرسکے تو پھر کب کریں گے۔ بذریعہ جوروجبر اگر آپ رام مندر تعمیر کرسکتے ہیں تو شوق سے کرلیں لیکن اس کے لئے آگ کا دریا تیر کرکے جانا ہوگااور نہیں تو پھر اب سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کریں۔

مزید پڑھیں >>