عالم اسلام

آہ وہ اُمت نہ رہی

ان حالات میں اگر مسلمان اپنے رشتے کی مضبوطی کی فکر نہ کریں تو وہ دن دور نہیں جب اس نسلِ مسلمان کو نیست ونابود کر کے اس کی جگہ دوسری نسل کو کھڑا نہ کیا جائے گا۔ کیوں کہ یہ خدائے ذوالجلال کی سنت ہے کہ تبدیلی اس سے پہلے نہیں آتی جب تک نہ وہ قوم خود کھڑی ہو جائے۔

مزید پڑھیں >>

لارنس ابھی زندہ ہے!

آج فلسطین جس صورتحال سے دوچار ہے اس میں سعودی حکمرنوں کا بھی بہت بڑا حصہ ہے (شاہ فیصل مرحوم کے استثناء کے ساتھ)ہونا تو یہ چاہئے تھا کہ وہ سو سال پرانے اپنے پاپوں کا پرائشچت کرتے مگر ہو یہ رہا ہے وہ یہودی قبضے کوزیادہ سے زیادہ مستحکم بنانے کی کوشش کر رہے ہیں وجہ یہ ہے کہ جتنی جلدی فلسطین صفحہء ہستی سے مٹ جائے گااتنی جلدی کم سے کم دنیاوی اعتبار سے یہ اپنی ذمے داریوں سے سبکدو ش ہو جائیں گے۔دوسری طرف الجزیرہ ،جو کہ دنیا کہ واحد مسلم بین الاقوامی چینل ہے،اور ترکی ان کے آقا کی آنکھوں میں کھٹک رہے ہیں ۔الجزیرہ دنیا میں ہر جگہ امریکی دادا گری کے آڑے آتا ہے اور رجب طیب اردگان ہمیشہ امریکی صدر کی آنکھوں میں آنکھیں ڈال کر باتیں کرتے ہیں ۔ان کی یہ بات امریکیوں کے لئے ناقابل برداشت نہیں ہے. ناقابل برداشت یہ ہے کہ اب ترکی کم و بیش ایک دہائی سے رجب طیب اردگان کے زیر سایہ اسرائیل کی سرپرستی سے باہر نکل چکا ہے.

مزید پڑھیں >>

یہ محل سراؤں کے باسی،قاتل ہیں سبھی اپنے یاروں !

حقیقت ہے کہ مودی اور ڈھونگی کو گائے سے کیا سروکار،وہ تو آرایس آرایس کے دلہ اورچمچہ ہیں ،انہیں تو برہمنواد کو ستہ میں باقی رکھنے کے لیے استعمال کیاجارہاہے.کاش کہ ملک کے بھگت جن اس کو سمجھ لیتے کہ سیاسی بھگتی کے نشے میں ڈوب کر وہ جن لوگوں کا قتل کرتے ہیں ،وہ انہی کے معاشرہ اور ملک کا فرد تھا،ہے اوررہےگا.

مزید پڑھیں >>

اسلامی کلچر یا اسلامی ثقافت کیا ہے؟ (چوتھی قسط)

جائیداد کی ملکیت اور اس کی وراثت کا حق افراد سے چھین کر حکومت نے اپنے قبضہ میں کرلیا ہے۔ تجارت بھی حکومتی استحصال زر کا ایک ذریعہ بن چکی ہے۔ ان کی زندگی پابندیوں کی وجہ سے قید و بند کا نمونہ ہے جہاں آزادی کا نام و نشان نہیں اور اگر اس قسم کی کوئی کوشش کی جاتی ہے تو اسے بغاوت قرار دیتے ہوئے کچل دیا جاتا ہے، ہنگری کی مثال ہمارے سامنے ہے۔ جہاں محبانِ وطن نے روسی ٹینکوں کا مقابلہ کرتے ہوئے جان کی بازی لگا دی لیکن پھر بھی اس نو آبادیاتی چنگل سے آزادی نصیب نہ ہوئی۔

مزید پڑھیں >>

تنِ حرم میں چھپا دی ہے روح بت خانہ!

ہر چند سال بعد قالین ، جدید ماربلس اور گرینائیٹ سے مساجد کی تزئین نو اور اے سی کی تنصیب ، شہری علاقوں کی مساجد کمیٹیز کا نیا مشغلہ بنتا جارہا ہے ۔ ہماری ناقص عقل یہ سمجھ نہیں پائی کہ جس قوم میں صحت، صفائی اور تعلیم کا معیار ملکی اوسط سے کہیں کم ہے اور جہاں مختلف میدانوں میں صلاحیتوں کا بدترین بحران اور قحط بپا ہے ، کیا مساجد کا اضافی ڈیکوریشن اور ائییر کنڈیشننگ واقعی ثواب جاریہ کہلائے گا ؟

مزید پڑھیں >>

قطر کی ناکہ بندی اسلامی اقدار کے خلاف!

صدر ترکی طیب اردوگان نے سعودی عرب اور ان کے دوست ممالک جو اپنے آپ کو مسلم ممالک کی فہرست میں شامل کرتے ہیں ان کے بارے میں کہا ہے کہ ان ممالک نے اسلامی اقدار کی ذرا بھی پرواہ نہیں کی۔ رمضان جیسے مقدس مہینہ میں قطر کی ہر طرح سے ناکہ بندی کر دی تاکہ قطر کی حکومت اور اس کے شہری پریشان ہوجائیں ۔

مزید پڑھیں >>

رمضان اور اتحاد امت!

۔ماہ رمضان کوروزہ کی فرضیت سے قبل ہی سے ،اس کے ماہِ نزول قرآن ہونے کی وجہ سے شرافت اور فضیلت حاصل ہے ، اور خود قرآن کریم میں جا بجا ’’وحدت امت ‘‘ کی دعوت کی دی گئی ہے ، مسلمانوں کی مابین پھوٹ اور تفرقہ بازی اور فرقہ بندیوں کو ناپسند کیا گیا ہے ، رمضان المبارک کے موقع مسلمانوں کو خصوصا یہ سبق یاد رکھنا چاہئے،اس ماہ کے ماہ نزول قرآن ہونے کی وجہ سے قرآن کا یہ پیغام مسلمانوں کے پیش نظر رہے کہ قرآن کریم میں جا جا بجا اتحاد اتفاق کی دعوت دی گئی ہے

مزید پڑھیں >>

مسلم ممالک کے درمیان تنازعات!

عالمی پولیس مین کا کردار ادا کرنے والے امریکہ نے ایک ایک کر کے سب ملکوں کے سربراہان کو ایک ایسا چاکلیٹ تھما دیا، جو اصل میں چاکلیٹ نہیں زہر ہے… بجائے اس کے کہ مسلم ممالک ان کے اس بظاہر ’’مدھر سندیش‘‘ کو سمجھ جاتے …وہ پے درپے اسی کی طرف لپک رہے ہیں

مزید پڑھیں >>

بہار عرب:اک عمر گذری حسرت فصل بہار میں !

اس دنیا کی تاریخ میں ایک سے ایک باجبروت طاقتور سلطنتیں رہ چکی ہیں وہ اب سب زمین کا پیوند ہوگئی ہیں ۔ سعودی سلطنت کا زوال بھی یقینی ہے ۔مستقبل کا مؤرخ جب سعودی حکومت کے زوال کے اسباب لکھے گا تو وہ لکھے گا کہ اس حکومت کے کار پرداز اس وقت کی بڑی طاقتوں کی سازش کا شکار ہوگئے تھے بڑی طاقتوں نے اپنے خاص مقاصد کے تحت الزام لگایاتھاکہ عرب ملکوں میں دہشت گردی پیدا ہورہی ہے۔ عرب ملکوں نے فوراً اس الزام پر یقین کرلیا اور اپنے یہاں ان تنظیموں کو جو مغربی تہذیب کا مقابلہ کررہی تھیں دہشت گرد قرار دے دیا اور علماء اور اعیان فکر اسلامی کو گرفتار کیااور جوکام مغربی طاقتوں سے نہیں ہوسکتا تھا وہ ان عرب ملکوں نے کردکھایا ۔

مزید پڑھیں >>