تبصرۂ کتب

فیروز اللغات کا تنقیدی جائزہ (آخری قسط)

فیروز اللغات نے اسلامی اور عربی اصطلاحات کے صحیح معانی اور مفاہیم کے بیان کا اہتمام نہیں کیا ہے۔ اکثر اصطلاحات وتراکیب کو غلط ضبط کیا گیا ہے وہیں کوئی اصول اور ضابطہ یا کوئی معیار قائم کرنے کی کوشش نہیں کی گئی ہے۔ کسی کا لفظی معنی بتایا تو کسی کا مفہوم، کسی کی تشریح کردی تو کسی اصطلاح میں اپنے حساب سے کوئی اور معنی پہنادیا۔ کسی آیت کے ٹکڑے کی طرف اشارہ کیا کہ قرآنی آیت ہے تو بہت ساری آتیوں کو یوں ہی چھوڑ دیا۔اوپر دی گئی مثالوں سے واضح ہوتا ہے کہ ان عربی اور اسلامی اصطلاحات پر کام کرنے والے کے لیے عربی زبان کی نزاکت کا علم ہونا اور اسلامیات سے صحیح واقفیت ہونا بہت ضروری ہے ورنہ وہ یوں ہی غلطیوں کا ارتکاب کرے گا۔

مزید پڑھیں >>

فیروز اللغات کا تنقیدی جائزہ

میرے سامنے فی الحال اردو لغت نویسی کے آخری دور کی تالیف شدہ مشہور لغت ’’فیروز اللغات‘‘ ہے جسے مولوی فیروزالدین نے ترتیب دیا ہے اور عرصے سے متداول ہے۔ اس مضمون میں میں نے اس کے اضافہ شدہ جامع ایڈیشن کو بنیاد بنایا ہے جس میں بے شمار عربی اور اسلامی اصطاحات کااندراج کیا گیا ہے۔گذشتہ دنوں ’’اردو میں عربی الفاظ ایک جائزہ ‘‘کے موضوع پرکام کرتے ہوئے اردو کی دیگر لغات کے ساتھ فیروز اللغات بھی میری مطالعے میں رہی ۔اس دوران اس میں موجود اغلاط کو دیکھ کر بڑی حیرت ہوئی۔اس مضمون میں میں نے فیروز اللغات میں وارد عربی الفاظ سے دامن تہی کرتے ہوئے صرف عربی واسلامی اصطلاحات وتراکیب کا جائزہ لیا ہے۔

مزید پڑھیں >>

افضل حسینؒ: حیات و خدمات

تحریکِ اسلامی ہند میں مرحوم افضل حسینؒ (1918ء۔ 1990ء) کی شخصیت محتاج تعارف نہیں ہے۔ مرحوم ان نادر روزگار شخصیات میں سے ہیں ، جن کی خدمات کو کبھی فراموش نہیں کیا جا سکے گا اور ان کا نام ہمیشہ آب زر سے لکھا جا تا رہے گا۔ موصوف 1944ء میں باقاعدہ تحریک سے وابستہ ہوئے اور زندگی کی آخری سانس تک اس کے دامن کو تھامے رکھا۔

مزید پڑھیں >>

حیدرآباد میں اردو ذرائع ترسیل و ابلاغ بیسویں صدی کی آخری دہائی میں

مصطفی علی سروری کی اردو کتاب ’’ حیدرآباد میں اردو ذرائع ترسیل و ابلاغ بیسویں صدی کی آخری دہائیــ میں ‘‘اردو صحافت پر لکھی جانے والی کتابوں میں اہم اضافہ ہے اور ابلاغیات کی سائنس کو سمجھنے اور حیدرآباد میں ابلاغیات کے ارتقا سے واقفیت کے لئے اہمیت رکھتی ہے ۔ پیشہ صحافت سے وابستہ ہر صحافی کو یہ کتاب ضرور پڑھنی چاہیے۔ ایک ایسے دور میں جب کہ کتابوں کی خریداری ایک اہم مسئلہ ہے میں مصنف کو مشورہ دینا چاہوں گا کہ وہ اس کتاب کا مواد انٹرنیٹ پر آن لائن مفت کردیں ۔

مزید پڑھیں >>

خدمت خلق:فضیلت،اہمیت اور ضرورت

یوں تو خدمت خلق کے بسیط موضوع پر متعددعلماء نے قلم اٹھایا،مختلف انداز سے خامہ فرسائی کی گئی،متنوع گوشوں کو اجاگر کیاگیا؛مگرزیر تبصرہ کتاب ’’خدمت خلق ؛فضیلت،اہمیت،ضرورت‘‘ جس جذب دروں اور سوزفزوں کے ساتھ لکھی گئی،ایسی مثالیں خال خال ہی دیکھنے میں آئیں۔

مزید پڑھیں >>

مولوی محمد عبدالغفارؒ: حیات وخدمات

مولوی محمدعبدالغفار مرحوم خطیب وامام مسجد رضا بیگ احمدی بازار نظام آباد ، معتمد مسلم پرسنل لا کمیٹی نظام آباد وقائد جماعت اسلامی ایک وضعدار علمی شخصیت تھی۔ جنہوں نے کم وبیش 60سال تک مسلمانان نظام آباد کی رہنمائی اوررہبری فرمائی تھیں ۔وہ ماہراقبالیات کی حیثیت سے بھی اپنی پہچان رکھتے تھے۔

مزید پڑھیں >>

انیتا نائر کی نئی کتاب: معجزہ اور بیبی  جان 

ایک دنیا مسلمانوں کے خلاف ہو رہی ہے . ٹرمپ نے اقتدار سمبھالتے ہی مسلمانوں کے خلاف فیصلے لینے شروع کر دیے، ان فیصلوں کا جواب صرف ایران نے دیا .باقی مسلم ممالک بھی امریکیوں کے داخلے کو ممنوع قرار دیتے تو امریکا ہل جاتا .ویسے بھی امریکی سڑکوں پر مخالفت کا بازار گرم ہے .مخالفت کی یہ آگ امریکا سے برطانیہ تک پھچ چکی ہے .یہ امریکا میں رہنے والے عوام کا فرمان ہے اسے نظر انداز نہیں کیا جا سکتا .میڈیا بھی کھل کر ٹرمپ کی مخالفت میں سامنے ہے .اسلئے ٹریمپ کو ناراض ہو کر کہنا پڑا کہ وہ امریکن میڈیا کو تسلیم نہیں کرتے

مزید پڑھیں >>

گجرات فائلس: حق گوئی و بے باکی کی ایک شاندار مثال

یہ وہ کتاب ہے جس نے اپنی طباعت کے ساتھ ہی صحافت ومیڈیا کے افق پر اور سیاسی گلیاریوں میں بھی زبردست ہلچل اور بے چینی پیدا کردی ہے ۔ اس کتاب کو تہلکہ تو مچانا ہی تھا ،کیونکہ جن حقائق کا اس میں انکشاف کیا گیا ہے وہ کوئی عام حقائق نہیں ہیں ، نازک اندام شیردل مصنفہ نے اس میں گجرات فسادات کے پس پشت کارفرما انسان نما درندوں کے مکروہ چہروں سے خوشنما مکھوٹوں کو کھرچ کھرچ کر نکال کران ظالموں کو انسانیت کی عدالت میں برہنہ کرکے پیش کرنے کی انتہائی کامیاب کوشش کی ہے. اور وہ اپنی کوشش میں بے حد کامیاب بھی ہوئی ہے ۔

مزید پڑھیں >>

گجرات فائلس

کیوں کہ یہ کتاب دراصل دنیاکی سب سے بڑی جمہوریت -ہندوستان -کے ایک صوبے میں رونماہونے والے ایک ایسے سلسلۂ واقعات کے پوشیدہ حقائق سے پردہ اٹھاتی ہے، جس نے ملکی ہی نہیں، بین الاقوامی سطح پر ہندوستان کی جمہوری شناخت اور تشخص کوکٹہرے میں کھڑاکردیاتھا، 2002ء کے فروری ؍ مارچ کے مہینے میں گجرات میں جوانسانیت سوزحادثے رونماہوئے، وہ ہندوستان کی فرقہ وارانہ فسادات کی تاریخ میں سب سے زیادہ خوفناک، انسانیت سوزاورملکی سسٹم کے لیے شرمناک تھے، اس واقعے نے تب کے وزیر اعظم مسٹراٹل بہاری واجپئی کوعلانیہ اپنی ناکامی و شرمندگی کااظہارکرنے پر مجبور کردیا تھا۔

مزید پڑھیں >>

انجام

عزیر انجم کادوسرا افسانوی مجموعہ "انجام" آپ بیتی سے زیادہ جگ بیتی شعر و ادب کی دنیا کو ملک گیر شہرت یافتہ نام عطا کرنا مشترکہ چمپارن کی روایت رہی ہے - اسی روایت کو جاری رکھتے ہوئے دور حاضر میں مشرقی چمپارن نے افسانہ نگاری میں ایک نیا نام عزیر انجم کا جوڑا ہے - عزیر انجم کی پیدائش محمد سجاد حسین (مرحوم) اور محترمہ رقیبہ خاتون کے گھر سسونیا، موتیہاری، مشرقی چمپارن میں 16 مئی 1965 کو ہوئی

مزید پڑھیں >>