سیاست

ہندوستان میں سلسلۂ چشتیہ کا ارتقائی سفر (دوسری و آخری قسط)

پوری دنیا میں اولیاء وصوفیاء نے اسلام کی تبلیغ وترویج میں جو نمایا کردار اداکیا وہ اہل فہم پر روشن ہے،بالخصوص ہندوستان میں ،جہاں سلاطین نے اپنی فتوحات کے پرچم لہرائے ، وہی صوفیاء نے اپنی روحانی توجہات سے لوگوں کے دلوں کو تسخیر کیا ،لیکن جب ان سلاطین کو عروج حاصل ہونے لگا تو جاہ ومنصب سیم و زرکی ہوس میں آپسی رسہ کشی اور خانہ جنگیوں کا شکار ہوگئے،

مزید پڑھیں >>

بابری مسجد مقدمہ: بی جے پی کا فائدہ،انصاف کا قتل

بی جے پی کے لیڈران پر بابری مسجد مسماری کی مجرمانہ سازش رچنے کا الزام ثابت ہو گیا تو ان کا تو کچھ نہیں ہو گا کہ ان کے سامنے اعلیٰ عدلیہ میں اپیل کا آپشن موجود ہے ،ان کی زندگی میں جس کا نتیجہ آنے کی امید نہیں ۔لیکن یہ بی جے پی کے لئے بہت فائدہ مند ہو سکتا ہے کہ وہ اپنے لیڈران کے بابری مسجدکے مجرم ثابت ہو نے کو ہندو دھرم،ہندو پرائیڈ اورہندو عوام کے لئے اپنی قربانی قراردے کر ہندوؤں کو اپنے حق میں مزید پولرائز کر نے کی کامیاب کوشش کرے اور اگر ایسا ہوا تو یہ حقیقت میں انصاف کا قتل ہی ہو گا ۔

مزید پڑھیں >>

مسلم پرسنل لابورڈ مسلمانوں کا نمائندہ نہیں!

بورڈ ہندوستانی مسلمانوں کی نمائندہ جماعت نہیں ہے۔ہاں اسے جزوی یاضمنی طورپروہ ہرمسلک کی نمائندہ ہوسکتی ہے کیوں کہ بورڈ نے سبھی مسالک کے لوگوں کو نمائندگی دی ہے مگرسوال یہ ہے کہ جن لوگوں کونمائندگی دی ہے کیاوہ اپنی جماعت میں اتنی اہمیت رکھتے ہیں ؟کیا انہیں اہم علمی استعدادحاصل ہے؟ کیاوہ کسی مسئلے کاگہری بصیرت کے ساتھ ادراک کرنے کے اہل ہیں؟ کیاان کی ہربات کوان کی جماعت کے بڑے قبول کرلیں گے ؟ اگر وہ اپنی جماعت کے نمائندہ نہیں ہیں توانہیں بورڈمیں شامل کرکے یہ کیوں ثابت کیاجارہاہے کہ بورڈ تمام مسلمانوں کا نمائندہ ہے؟

مزید پڑھیں >>

دیش کی بیٹیاں دیش کے باہر ہی نہیں اندربھی تحفظ چاہتی ہیں!

اس وقت ہمارے ملک میں خواتین کی خبرگیری، حسن سلوک اور احترام کی جو فکر پروان چڑھ رہی ہے ،نئی دہلی کی رہنے والی 20سالہ عظمیٰ کی پاکستان سے واپسی اسی سلسلسہ کی کڑی ہے۔ خبروں کے مطابق معاشقہ کی وجہ سے پاکستان جانے والی یہ لڑکی وہاں مبینہ طور پر ظلم وزیادتی کا شکار ہوئی۔لیکن خود اس لڑکی کی سوجھ بوجھ اورپاکستان میں ہندوستان کے ڈپٹی ہائی کمشنر جے پی سنگھ کی کوششوں کے نتیجہ میں اس کی وطن واپسی ممکن ہوسکی ۔

مزید پڑھیں >>

ہندوستان میں سلسلۂ چشتیہ کا ارتقائی سفر (قسط اول)

یہ سلسلہ بارویں صدی عیسوی میں ایک نیا موڑ اختیار کیا،جس کے اوائل میں تہذیب وتمدن کے لیے مشہور عالمِ اسلام کے بڑے بڑے شہرتاتاریوں کے ہا تھ برباد ہو کر رہ گئے ،ہندوستان ایک ایساملک تھاجو اس سورش سے محفوظ تھا یہی وجہ تھی کہ سکون سے محروم شریف ترین خاندانوں نے ہندوستان کو مسکن بنایا،جو ہندوستان کے لیے خوش آ یئن بات تھی کہ ہند اسلامی فکراور روحانی قوت کا نیا مرکز بننے جارہاہے،اسی سیلِ رواں میں صوفیا بر صغیر میں تشریف لائے ،انمیں نمایاں اور شہرِآفاق نام ’’خواجہ معین الدین چشتی ‘‘ کا ہے تصوف کے مشہور سلاسل میں سے جس سلسلہ سے آپ منسلک تھے وہ’’چشتیہ‘‘ہے۔

مزید پڑھیں >>

مغربیوں کا اسم شریف پاک ہے، بس ہم مسلمان دہشت گرد ہیں!

بین یامین نیتن یاہو صاحب کا مختصراً کہنا یہ تھا کہ اسلامی دہشتگرد اسرائیل کے بے چارے بچوں کو قتل کررہے ہیں اور اُن کی زندگیاں اجیران کررہے ہیں اور اب ڈیموکراسی اور انسانی حقوق کے علمبردار ترقی یافتہ مغربی دنیا پریہ ذمہ داری عائد ہوتی ہ کہ وہ اِن اسلامی دہشتگردوں سے روئے زمین کو پاک کریں اور اِس کار خیر میں قیادت کی واحد با صلاحت طاقت عالم انسانیت کا روشن چراغ اور مظلوموں اور بے چاروں کا حامی ایالات متحدہ امریکہ ہے!!!

مزید پڑھیں >>

طلاق دینے کا صحیح اور غلط طریقہ!

طلاق دینے کابہتر اورمحفوظ طریقہ وہی ہے جو اوپر بیان ہوا، مگر افسوس کہ طلاق دینے کےجوغلط اورغیرمحفوظ طریقے ہیں ہمارے معاشرہ میں بدقسمتی سے وہی رائج ہوگئے ہیں ، جس سے معاملہ سلجھنے کے بجائے اورالجھ جاتاہے۔مثلا اس طرح طلاق دیناغلط ہے:(الف)میں نے تم کو تین طلاق دیا،(ب)میں نے تم کو طلاق دیا،طلاق دیا،طلاق دیا، (ج) طلاق، طلاق، طلاق وغیرہ کیوں کہ اس صورت میں تین طلاق مغلظہ واقع ہوجاتی ہے، جس میں رجوع کرنے یانکاح کرنے کی گنجائش نہیں رہتی ہے۔

مزید پڑھیں >>

کہاں چراغ جلائیں ہوا ہے چاروں طرف!

کروڑوں کان یہ سننے کے لئے لگے ہیں کہ پانچ محترم ججوں نے کیا فیصلہ کیا؟ اور فیصلہ متفقہ ہے یا پانچ میں اکثریت کے بل پر ہے۔ مسلم پرسنل لاء بورڈ کے ایک سکریٹری فضل الرحیم صاحب کے نام سے ایک اور حلف نامہ سپریم کورٹ میں داخل کیا گیا ہے جس میں جدید اور مثالی نکاح نامہ کا یقین دلایا گیا ہے اور کہا گیا ہے کہ نکاح پڑھانے والوں کو ایڈوائزری دی جائے گی کہ نکاح پڑھاتے وقت لڑکے اور لڑکی کو بتادیا جائے کہ طلاق ثلاثہ ناپسندیدہ فعل ہے۔

مزید پڑھیں >>

علماء اپنی تقاریر کا انداز بدلیں!

علماء کے طرز خطاب کی اصلاح کی تجاویز دے کراس نے چھوٹا منہ بڑی بات والے مقولہ کو صادق کیا ہے لیکن اس کی نیت کسی پر تنقید یا کسی کی تنقیص کی نہیں بلکہ علماء سے عوام کو پہنچنے والے دینی فوائد کو مزید وسعت دینے کی ہے اور امید قوی ہے کہ علماء راقم کو مجبور سمجھ کر ضرور معاف فرمائیں گے لیکن اپنے روایتی بیانات سے ضرور پیچھا چھڑائیں گے۔

مزید پڑھیں >>

مودی کا سفر: پتلی گلی سے اکھنڈ بھارت تک!

سیاسی حلقوں میں یہ بحث شروع ہوگئی ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی ’’کانگریس مکت بھارت‘‘ کے نعرہ سے چلے تھے اور اس میں کامیاب بھی ہوتے نظر آرہے ہیں ۔ لیکن ابھی اسے وہ دانت سے کیوں پکڑے ہوئے ہیں ؟ ابتدا میں انہوں نے بڑے بڑے گھپلے بڑی بڑی بدعنوانیاں اور بھرشٹاچار کو اس کا سبب بتایا تھا اور یہ بات آج بھی وہ کہتے رہتے ہیں کہ تین سال میں ایک بھی بھرشٹاچار کا معاملہ سامنے نہیں آیا۔ ہمارے خیال سے یہ بات ضمنی ہے اصل بات وہ ہے جو اب آدتیہ ناتھ یوگی کو وزیر اعلیٰ بنانے سے سامنے آئی ہے کہ اُترپردیش میں اب زعفرانی رنگ کے کپڑے پر لڑکے اور لڑکیاں ٹوٹ پڑی ہیں ۔

مزید پڑھیں >>