سیاست

تحفظ نفس کے بغیر تعلیم ممکن نہیں!

طلبہ و طالبات جو قوم کے مستقبل ہیں جب انکے محافظ ہی ظالم اور بھیڑیئے نکل جائیں تو انکا وجود دوسروں سے کیسے محفوظ رہیگا,اور جب تعلیمی اداروں کا یہ حال ہوگا تو بھلا قوم میں کہاں سے ایسے لوگ پیدا ہونگے جو ملک کا نام روشن کریں , پوری دنیا اسبات کو مانتی ہیکہ ہر قوم اور ملک کی امیدیں طلبہ و طالبات سے ہی وابسطہ ہوتی ہیں اگر اس آگ کو یہیں ٹھنڈھانہیں کیا گیا تو اسکی لپیٹ سے پورے ملک کے طلبہ و طالبات متاثر ہونگے اور اس سے حکومت کا وقار بھی خطرے میں آجائیگا

مزید پڑھیں >>

مسلم قیادت: ہندوستان کے تناظر میں

مسلمانوں کی کسی واقعی قیادت کے ابھرنے کو مختلف سیاسی گروہ پسند نہیں کریں گے اس لیے کہ اس وقت مسلمان ان کے آسان شکار ہیں۔ مسلمان ملک گیر ملی مسائل کے حل کے لیے سیاسی پارٹیوں کی طرف رجوع کرتے ہیں اور ان سے سودے بازی کی کوشش کرتے ہیں۔ اس کے علاوہ مسلمان آبادیوں کے مقامی مسائل کے حل کے لیے بھی وہ سیاسی پارٹیوں کا سہارا ڈھونڈتے ہیں اور اس سلسلے میں پارٹیوں میں شمولیت اختیار کرتے ہیں اور ان کی تائید و حمایت کرتے ہیں۔ یہ سارا طریقِ کار اسلامی اجتماعیت کی جڑ کاٹ دینے والا ہے اور اس رویے کو جاری رکھتے ہوئے نہ کبھی کوئی مسلمان قیادت ابھر سکتی ہے، نہ مسلمان منظم ہوسکتے ہیں۔

مزید پڑھیں >>

وزیر اعظم کی قلابازی

آج وزیراعظم اپنی ہر کمان سے کانگریس حکومت پر طنز کے تیر پھینک رہے ہیں اور خود کا یہ حال ہے کہ جس تقریر پر انہیں پورے ملک نے مبارکباد دی تھی اور سب کی آنکھیں لگی تھیں کہ دیکھیں کہ کون کون ممبر داغی قرار دے کر جیل جاتا ہے وہ سب کے سب اب دیکھ رہے ہیں کہ نریندر مودی نام کے پاک صاف لیڈر پارلیمنٹ کے داغی ممبروں کے گوموت سے بھری ہوئی چادریں لپیٹے کھڑے ہیں اور انہیں پارسا ثابت کرنے پر کمربستہ ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

آر ایس ایس انگریزوں کا وارث!

بھارت میں دنگے فسادات برپا کرنے میں اس تنظیم کا نام سر فہرت ہے۔ 1927ء کا ناگپور فساد ان میں اہم اور اول ہے۔ 1948ء کو اس تنظیم کے ایک رکن ناتھورام ونائک گوڑسے نے مہاتما گاندھی کو قتل کر دیا۔ 1969ء کو احمد آباد فساد ، 1971ء کو تلشیری فساد اور 1979ء کو بہار کے جمشید پور فرقہ وارانہ فساد میں ملوث رہی۔ 6 دسمبر 1992ء کو اس تنظیم کے اراکین (کارسیوک) نے بابری مسجد میں گھس کر اس کو منہدم کر دی۔

مزید پڑھیں >>

ایک اور کلین چٹ

آخر کب یہ طے کیا جائے گا کہ ہماری اس حالت کے ذمے دار کون ہیں ؟ہم کب مل بیٹھ کر اپنی آئندہ حکمت عملی طے کریں گے؟ ہم بھی متعدد بار لکھ چکے ہیں اور دیگر لکھاری بھی کہ آج کا دور میڈیا کادور ہے۔ اب جنگیں میدان جنگ میں کم اور میڈیا میں زیادہ  لڑی جاتی ہیں۔ ہندی اور انگریزی میں ہمارے اخبارات اور ٹی وی چینل کیوں نہیں ہیں ؟

مزید پڑھیں >>

انجام گلستاں کیا ہوگا؟

کل ایک گودام میں ایک رپورٹر گیا تو مالک نے اسے بتایا کہ ہم تو کام بند کرنے جارہے ہیں ۔ کیونکہ ہم ابھی نوٹ بندی سے ہی سیدھے نہیں ہوئے تھے کہ جی ایس ٹی کی مار پڑگئی۔ اب خریدار ٹیکس دینے پر تیار نہیں اور حکومت تلوار لئے بیٹھی ہے کہ 18  فیصدی لائو۔ اتنے میں ہی آس پاس کے دوسرے کاروباری آگئے۔

مزید پڑھیں >>

آر ایس ایس اور فاشزم

  بھارتیہ جنتا پارٹی کی اپنی یہ ابتدائی تاریخ یہی بتاتی ہے کہ اس کا جنم آر. ایس. ایس ہی کے توسط سے ہوا ہے۔ علاوہ ازیں خود آر.ایس.ایس بھی اسے اپنی ہی پارٹی مانتی ہے۔ چنانچہ آر. ایس. ایس کے اشاعتی ادارہ سروچی پرکاشن سے شائع کتاب ’’آر. ایس. ایس ایک تعارف‘‘ میں جن 30 تنظیموں کو یکساں نظریاتی تنظیم بتایا گیا ہے اس میں ایک نام بھارتیہ جنتا پارٹی کا بھی ہے۔

مزید پڑھیں >>

کیا روہنگیا میں انسا ن نہیں!

ایسے وقت میں حکومت ہندی کی نا قص سوچ یہ بتا تی ہے کہ حکومتی سطح پر انسا نیت با قی نہیں رہی ہے ۔ کم از کم انسا نی بنیا دوں پر دیکھا جا ئے کہ روہنگیا سے آنے والی مخلوق انسا ن ہے جا نور نہیں ہے انہیں سہا رے کی ،پنا ہ کی ضرو رت ہے اگر یہ پنا ہ ہم نہیں دے پا ئے تو دنیا ہنسے گی اور کہیگی کہ انسا نیت مر چکی ہے ۔

مزید پڑھیں >>

کیا اسے انصاف کہا جاسکتا ہے؟

پہلو خاں نے نزاعی بیان میں چھ غنڈوں کا نام لیا تھا۔ جن کے فرار ہونے کے بعد پولیس نے ان کا پتہ بتانے والوں کو انعام کا بھی اعلان کیا تھا۔ لیکن نہ پولیس کی بات بنی نہ نقوی صاحب کی یہ بات صحیح ہوئی کہ ان پر سنگین دفعات ہیں۔ اور سی آئی ڈی نے انہیں گئوشالہ میں  دکھاکر کلین چٹ دے دی۔ پہلو خاں کے بیٹے ہائی کورٹ جارہے ہیں وہاں بھی شاید انہیں کچھ نہ ملے انہیں تو سیدھے سپریم کورٹ جانا چاہئے۔

مزید پڑھیں >>