ادب

مولانا کا بیٹا

رات اسے دیر تک نیند نہیں آئی۔ وہ کیا کیا سوچتا رہا۔ اس نے دیکھا کہ وہ چوتھی منزل پر ہے اور جہیز کے خلاف اس کی تقریر ہورہی ہے، مجمع عام میں اس نے لوگوں کو آنسوؤں میں بھگودیا ہے، منبر سے اس کی آواز بلند ہورہی ہے اور لوگ توبہ کرتے جارہے ہیں ، ایک بڑے جلسے کے اسٹیج سے وہ تقریر کرکے اتر رہا ہے کہ دس بیس لوگوں نے اسے گھیر کر زناٹے دار طمانچہ لگادیا ہے۔ وہ گھبرا کر اٹھ بیٹھا۔ لیکن جب اس نے گھبراہٹ میں ادھر ادھر نگاہ دوڑائی تو پتہ چلا اس کے بستر سے متصل چارپائی پر لیٹے اس کے چھوٹے بھائی کے خراٹے کے علاوہ کمرے میں اور کچھ نہیں ہے اور تب اسے خیال آيا کہ وہ تو سویا ہوا تھا۔

مزید پڑھیں >>

علم ہی ترقی وکامیابی کا راستہ۔مسلم طلبہ اعلیٰ تعلیم کی طرف توجہ کریں انجمن ترقی وبقاء کی جانب سے منعقدہ سمینار واردویونیورسٹی سے کامیاب طلبہ کی تہنیتی تقریب

رپوتاژ: محسن خان ریسرچ اسکالر‘شعبہ ترجمہ‘ مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی موبائیل:9397994441 ای میل:mohsin_246@yahoo.com سرزمین دکن کویہ اعزاز حاصل ہے کہ دنیا کی پہلی اردو یونیورسٹی کا قیام یہاں عمل میں آیا لیکن چند وجوہات کی وجہ سے عثمانیہ یونیورسٹی …

مزید پڑھیں >>

ڈاکٹر محمد ہاشم قدوائی اب نہیں رہے!

ڈاکٹر محمد ہاشم قدوائی 1984 سے 1990 تک راجیہ سبھا کے رکن ہے جہاں وہ بڑی جرأت اور بیباکی سے ملکی اور قومی مسائل پر اظہارِ خیال کرتے رہے ہیں۔ ڈاکٹر ہاشم قدوائی وسیع المطالعہ شخص تھے۔ اُن کا شمار اردو اور انگریزی کے معروف اور ممتاز تبصرہ نگاروں میں ہوتا تھا۔ اُن کے اہم علمی اور سیاسی موضوعات پر اردو اور انگریزی اخبارات میں مراسلے شائع ہوتے رہے ہیں۔ مختلف موضوعات پر اُن کی متعدد کتابیں بھی شائع ہوئی ہیں۔ اُن کی کتاب نیشنلسٹ مسلم (آپ بیتی بہ زبانِ انگریزی) کا رسمِ اجرا گزشتہ دنوں نائب صدر جمہوریۂ ہند جناب محمد حامد انصاری کے ہاتھوں عمل میں آیا۔

مزید پڑھیں >>

دستک

یکایک وہ بستر سے اٹھی اور ٹیبل پر رکھے کمپیوٹر کو آن کیا اور یوسف اور ذلیخا کی سیریل کے آخری اپیسوڈ کو چالا کر وہ اسکے قریب آکربیٹھ گئی دونوں اس سیریل کو غور سے دیکھنے لگے اسوقت یوسف کی عمر تقریبا چالیس کی رہی ہوگی اور وہ اپنے دوبچوں اور بیوی سے بہت خوش تھے جبکہ ذلیخاایک بیوہ عورت تھی اور اب بوڑھی ہوچلی تھی لیکن وہ یوسف کی دیدارکیلئے پاگل ہوئی جارہی تھی وہ یوسف کی صرف ایک جھلک پانے کیلئے بے قرارتھی اورسڑکوں پرماری ماری پھر رہی تھی بلکہ اسکی یاد میں اس نے اپنی بنائی تک گنوا چکی تھی لیکن جیسے ہی یوسف کو ذلیخا کے اس حالت کے بارے میں پتہ چلا توتو وہ بے چین ہو اٹھے اور سب کچھ جانتے ہوئے بھی انہوں نے ذلیخا کو معاف کراسے اپنانا ہی مناسب سمجھااور انہوں نے اس سے نکاح کرلیا۔

مزید پڑھیں >>

اردو سائبر رسم الخط ‘یونی کوڈ میں مقام اور نستعلیق کے آ ئینہ میں

ہرکسی کے ذہن میں کبھی نہ کبھی یہ خیال ضرور آتا ہوگا کہ جہاں دنیا بھر کے مختلف ممالک میں بسنے والے انسان ایک دوسرے سے رابطے اور گفتگو کے لئے مختلف زبانوں کا استعمال کرتے ہیں جن میں چینی ‘انگریزی‘عربی‘اسپینی‘فرانسیسی‘فارسی کے علاوہ ہندوستان کی علاقائی زبانوں میں ہندی‘تلگو‘پنچابی‘گجراتی‘ ٹامل‘کنڑا‘بنگالی‘ملیالی اور مراٹھی سے قطع نظر پاکستان کی علاقائی زبانوں میں سندھی‘پشتو‘بلوچ اورشینا قابل ذکر ہےہیں اور جب دنیا میں سینکڑوں زبانیں بولی اور لکھی جارہی ہیں اور تمام زبانوں کا رسم الخط بھی مختلف ہے تو پھر کمپیوٹر اور انٹرنیٹ کی مجموعی شکل سائبر ٹکنالوجی پر ان تمام زبانوں کا رسم الخط کس طرح ظاہر ہوتاہے؟کیا کمپیوٹر کو دنیا کی تمام زبانیں آتی ہیں؟

مزید پڑھیں >>

شاہ رخ خان سے زیادہ اعجاز عبید اعزاز کے مستحق

شہر حیدرآباد کے محلے لنگرحوض میں مقیم اعجاز عبید کسی تعارف کے محتاج نہیں ہیں۔جس طرح اردو شاعری علامہ اقبال اور مرزاغالب کے کلام کے بغیر نا مکمل ہے ‘ مولانا الطاف حسین حالی اور سرسید احمد خان کے بغیر جدید اردو نثر کا باب ادھورا تصور کیا جاتا ہے اس طرح اعجازعبید کے بغیر عصری دور میں اردو کی ترقی کے ابواب نامکل ہیں

مزید پڑھیں >>

ماہ نامہ الاصلاح کریم نگر :ایک تعارف

چند افراد کی فکروں کا حسین شاہ کار اور امیدوں و آرزؤں کا گلدستہ بن کر ’’ماہ نامہ الاصلاح ‘‘کا وجود عمل میں آیا۔ماہ نامہ الاصلاح کو یہ امتیاز بھی حاصل ہے کہ یہ شہر کریم نگر اور پورے ضلع کا پہلا اور باضابطہ شائع ہونے والا رسالہ ہے۔ الحمد للہ گزشتہ 21 مہینوں سے ماہ نامہ الاصلاح پوری پابندی کے ساتھ وقت پر نت نئے مضامین اور اہم ترین عنوانات اور قیمتی و ضروری مقالات کے ساتھ شائع ہورہا ہے

مزید پڑھیں >>

لوح و قلم تیرے ہیں

منگل مورخہ3جنوری 2017ء بعد نماز مغرب قلم کاروان کی ادبی نشست المرکزہوٹل G7اسلام آبادمیں منعقد ہوئی۔ماہر ذہنیات جناب ڈاکٹرفیصل نے صدارت کی۔پروگرام کے مطابق آج کی نشست میں ڈاکٹرساجد خاکوانی کامضمون’’آمدسال نو‘‘اور ڈاکٹر مرتضی مغل کامضمون’’آرزوہے تجھے دیکھاکروں ‘‘پیش کرناطے تھے۔تلاوت کے بعد جناب اسرائیل الخیری نے مطالعہ حدیث پیش کیااور سابقہ نشست کی کاروائی بھی پڑھ کرسنائی۔آج کاپروگرام فکرفردافورم اور قلم کاروان کی مشترکہ کاوش کے طورپر منعقدہورہاتھا۔

مزید پڑھیں >>