تاریخ اسلام

جدید یورپ کا ارتقاء اور اسلام پر جدید مطالعات کا آغاز

 اخبارات ورسائل پر نظر رکھنے والے جانتے ہیں کہ اسلام اور مغرب کی کشمکش آج بھی جاری ہے ،مستشرقین کے انداز تحقیق کا رخ ضرور بد ل گیا ہے ان کے تحقیقات و مطالعات کا سلسلہ بند نہیں ہوا ہے چنانچہ انہی مقاصد کی حصولیابی کے لئے 9/ ستمبر  2001  ء کو امریکہ کے ولڈ ٹریڈ سنٹر پر حملہ کراگیا تاکہ اس کے ذریعہ افغانستان میں اسلامی حکومت کی اٹھنے والی چنگاری کو بجھا کر رکھ دیا جائے جس میں شاید انہیں کامیابی کم نقصان زیادہ ہوا اور اسی مقصد کے پیش نظر ابھی دو سال قبل ابو بکر البغدادی کی قیادت میں اسلامک اسٹیٹ کے نام پر جو خونی کھیل شروع ہوا وہ بھی اسی کا ایک حصہ ہے جسے امریکہ اور دیگر یورپین ممالک کا تعاون حاصل ہے ۔اس کے ذریعہ اسلام کے چہرہ کو مسخ کرنے اور اسلام کی طرف مائل ہونے والوں کو اس سے بیزار کرنے کی کوشش کی گئی جس میں انہیں ناکامی ملی ۔

مزید پڑھیں >>

فتح سندھ اور فاتح سندھ کی رواداری

تیرہ سو سال پہلے ایک ایسا خطہ جو مغرب میں مکران اور جنوب میں بحرعرب و گجرات اور مشرق میں موجودہ مالوہ کے وسط اور شمال میں ملتان سے ہوتا ہوا جنوبی پنجاب تک پھیلا ہوا تھا۔ تاریخ سے معلوم ہوتا ہے کہ ہزار سال پہلے جب آریہ قوم اس خطہ میں آئ تو اسکا نام "سندھو" رکھا ۔ لیکن گزرتے زمانے کے ساتھ ساتھ یہ نام "سندھ" کہلانے لگا۔ یہ نام اس قدر مقبول ہوا کہ ہزاروں سال گزرجانے کے بعد بھی اسکا نام سندھ ہی ہے۔

مزید پڑھیں >>

انہدام جنت البقیع ایک تاریخی المیہ

اسلام کی سب سے بڑی شناخت اس کے ماضی کی تاریخ کے دامن موجود اس کے آثارو باقیات ہیں ،جس کی وجہ سے آج عالمی سطح پر اسلام کی اپنی ایک الگ شناخت ہے۔عالمی استعمار کی سب سے بڑی کوشش یہی ہے کہ اسلام کی اس عظیم الشان تاریخ کو اس طریقہ سے مسخ کردیا جائے کی آنے والی نسلیں اپنی اصل پہچان سے محروم ہوجائیں ۔

مزید پڑھیں >>

اسلامی کلچر یا اسلامی ثقافت کیا ہے؟ (چوتھی قسط)

جائیداد کی ملکیت اور اس کی وراثت کا حق افراد سے چھین کر حکومت نے اپنے قبضہ میں کرلیا ہے۔ تجارت بھی حکومتی استحصال زر کا ایک ذریعہ بن چکی ہے۔ ان کی زندگی پابندیوں کی وجہ سے قید و بند کا نمونہ ہے جہاں آزادی کا نام و نشان نہیں اور اگر اس قسم کی کوئی کوشش کی جاتی ہے تو اسے بغاوت قرار دیتے ہوئے کچل دیا جاتا ہے، ہنگری کی مثال ہمارے سامنے ہے۔ جہاں محبانِ وطن نے روسی ٹینکوں کا مقابلہ کرتے ہوئے جان کی بازی لگا دی لیکن پھر بھی اس نو آبادیاتی چنگل سے آزادی نصیب نہ ہوئی۔

مزید پڑھیں >>

ملی زندگی کی چودہ صدیاں!

چودہ صدیوں کی مجموعی تاریخ بہ حیثیت مجموعی ایک خدا پرست ملت کی شاندار تاریخ ہے۔ اس میں فساد اور بگاڑ بھی طرح طرح کے آئے مگر اس کے کمالات کی بھی حد نہیں ہے۔ تاریخ کے اس لمبے چوڑے صحرا سے گزرنے والے قافلے نے زخم بھی بہت کھائے ہیں مگر اس کی فتوحات کی رفتار اور وسعت بھی بے مثال ہے۔

مزید پڑھیں >>

اسلامی کلچر یا اسلامی ثقافت کیا ہے؟ (تیسری قسط)

اسلامی ثقافت اور تہذیب اتنی قدیم ہے جتنی کہ نسل انسانی۔ اس کا آغاز پہلے نبی حضرت آدمؑ سے ہوا۔ اور اس کی تکمیل خاتم الانبیاء حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم سے ہوئی۔ حضرت آدمؑ پہلے شہری تھے۔ انھوں نے اسلامی طرز زندگی ہمارے سامنے رکھا اور اس کے بعد ہر نبی وہی پیغام لے کر آتا رہا، حتیٰ کہ قرآن حکیم ہماری رہنمائی کیلئے حضرت محمد صلی اللہ علیہ وسلم کی وساطت سے پہنچ گیا۔

مزید پڑھیں >>

اسلامی کلچر یا اسلامی ثقافت کیا ہے؟ (دوسری قسط)

اسلامی ثقافت کو دنیا میں ایک منفرد مقام حاصل ہے۔ اس کا آغاز محمد رسول عربی صلی اللہ علیہ وسلم کی بعثت مبارکہ کے ساتھ ہوتا ہے۔ اسلامی ثقافت و تہذیب و تمدن کی عمارت عقائد باطلہ پر نہیں بلکہ لا الٰہ الا اللہ پر استوار ہوئی۔ جس وقت اسلامی تہذیب و تمدن نے فروغ پایا اس وقت پورا یورپ وحشت و بربریت میں ڈوبا ہوا تھا۔ گرد و پیش کی دنیا میں عام پستی اور اخلاقی زوال کا دور دورہ تھا۔

مزید پڑھیں >>

حضرت علیؓ: خدمات وکمالات!

جو مختلف خصائل وفضائل کے حامل، متعدد محاسن واخلاق کا مجموعہ اور کئی ایک کمالات وصفات کا ایسا حسین پیکر تھے گویا ان کی ایک زندگی کئی زندگیوں کا خلاصہ ونچوڑ اورحیات کاہرشعبہ صفت ِکمال کا وہ نادر مرقع تھی ؛جس سے فضیلت وخصوصیت کے بے داغ خدوخال ابھر کر سامنے آتے تھے اور جس کے ہر کمال پر نظریں جم کر رہ جاتی تھیں

مزید پڑھیں >>

اسلامی کلچر یا اسلامی ثقافت کیا ہے؟

جب کوئی قوم کسی غیر ملک پر قابض ہوتی ہے تو وہاں اپنے اقتدار کے تحفظ کیلئے سب سے پہلے وہاں کے نصاب تعلیم کو بدل کر اس میں غلامانہ ذہنیت کا درس دینا شروع کرتی ہے تاکہ وہ پھر آزادی کے خواب دیکھنے کے قابل نہ رہے۔ یہی کچھ انگریز اپنے ڈیڑھ دو سو سالہ عہد میں کرتا رہا۔

مزید پڑھیں >>