تاریخ اسلام

خانہ کعبہ کا محاصرہ!

 سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے حال ہی میں امریکی اخبار نیو یارک ٹائمز کو دیے گئے انٹرویو میں کہا کہ۔۔۔ ہم ملک میں اسلام کو اس کی اصل شکل میں واپس لے جانا چاہتے ہیں اور سعودی معاشرے کو ویسا بنانا چاہتے ہیں جیسا وہ 1979 سے پہلے تھا۔ اس حوالے سے کئی لوگوں کے ذہن میں یہ سوال اٹھا کہ 1979 میں ایسا کیا ہوا تھا جس نے سعودی معاشرے کی شکل تبدیل کر دی تھی؟

مزید پڑھیں >>

 شیعہ مکاتب فکر کا آغاز و ارتقا

شیعوں کے تمام فرقے تاویل کے قائل ہیں ۔ ان کے یہاں اس آیت ”لا یعلم تا ویلہ الا اللہ والر سخون فی العلم یقولون آمنا بہ“ میں الا للہ پر وقف کرنا درست نہیں ہے۔ ان کے نزدیک وہ علماء بھی جو علم میں راسخ رہے ہیں ، یعنی انبیا، اوصیا اور ائمہ تاویل کرتے ہیں ۔ لیکن جس فرقہ نے اس فن کو ترقی دی اور خاص طور پر تمام احکام، عبادت اور قصص انبیا کی تاویلوں کے متعلق کتابیں لکھیں وہ اسماعیلیہ ہیں ۔ بعض صوفیا بھی تاویل کے قائل رہے ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

قرن اول کی صدا

یہ قانون قدرت ہے کہ  طلوع آفتاب سے قبل سپیدہ  سحرنمودار ہوجاتی ہے، بران رحمت سے پہلےٹھنڈی ہوائیں موسم پر شگال کا پتہ دیتی ہیں  اسی طرح جوں جوں آپکی عمر بڑھتی جاتی اور نبوت کا قریب آتاجارہاتھاآپکے مزاج میں غیر معمولی تغیر نمایا ہورہا تھا اور روح ایک لامعلوم شئ کے لیے بے قرار بے چین تھی، دھیرے دھیرے آپکی طبیعت عزلت نشینی کی طرف مائل ہوتی جارہی تھی، آپ سامان خورد ونوش لیے مکہ سے باہرغار حرا میں دنیا کے نگاہوں سے الگ مجاہدہ وریاضت اور مراقبہ میں مشغول رہتے تھے، جب قلب فیضان الہی کو قبول کرنے کے قابل ہوگیا تب نبوت کے آثار ظاہر ہونا شروع ہوگے۔

مزید پڑھیں >>

سعودی عرب: ماضی، حال اور مستقبل

حاسدین و شیعوں کے سارے خدشات اور قیاس آرائیاں سوائے جھوٹ کے پلندوں کے کچھ نہیں، کیونکہ پانچ چھ سالوں کی مکمل تیاری و ٹھوس ثبوتوں کے ذریعہ سے کرپشن پر جس طرح ہاتھ ڈالا گیا ہے اسے بدعنوانی و کربشن کے سدباب میں ایک اہم اور قابل تعریف قدم کہا جا سکتا ہے -تاکہ ہر شہری مطمئن رہے اور ظلم و زیادتی سے محفوظ ہو کر پر امن طریقے سے اپنی زندگی کی نیا کو آگے بڑھائیں -بلکہ ایک  اسلامی اور پاک و صاف معاشرہ برسوں کی روایاتی اقدار کے ساتھ اپنے آگے کا سفر کامیابی و کامرانی کے ساتھ طئے کرے -

مزید پڑھیں >>

سرزمین فلسطین قرآن کریم کی روشنی میں

یہ سرزمین جس کے تقدس اور تبرک کا تذکرہ قرآن کریم بار بار آیا ہے، جس کے مسلمانوں کے بطور وارث ہونے کا تذکرہ قرآن مجید نے کیا ہے، یہ سرزمین مسلمانوں کے یہاں نہایت متبرک اور مقدس گردانی جاتی ہے، لیکن افسوس صد افسوس کہ اس مقدس اور پاک سرزمین پر ناپاک یہودی اپنے قدم جمانے اور اس کو اپنی ملک اسرائیل کا دار الحکومت بنانے کے ناپاک عزائم بناچکے ہیں اور منصوبہ پر عمل در آمد کرنے کی کوشش کی جارہی ہے، ساری دنیا میں اس کے خلاف احتجاج جاری ہے، جلسے جلوس ہورہے ہیں ، مسلمانوں کو اس کے تقدس کو سمجھنا اور اس بیت المقدس کی بازیابی کے لئے اور اس پا ک سززمین پر ناپاک قدم پڑنے روکنے کے لئے ہرممکن کوشش کرنی چاہئے۔

مزید پڑھیں >>

 حضرت عیسیٰ علیہ السلامؑ قرآن و حدیث کی روشنی میں

حضرت عیسیٰ علیہ السلام خدا کے نبی، رسول اور اولوالعزم پیغمبروں میں سے ہیں ۔آپ کا اکرام و احترام عیسائی بھی کرتے ہیں اور مسلمان بھی۔ بلکہ قرآن کی روسے آپ پر ایمان و اعتقاد واجب و لازم ہے۔ آپ کی شخصیت کا ذکر قرآن مجید میں تفصیل کے ساتھ ملتاہے اور اسی طرح انجیل میں بھی آپ کا تذکرہ موجودہے۔انجیل اور اسرائیلیات سے متاثر ہوکر بعض مسلم کتابوں میں آپ کے سلسلے سے کچھ ایسے واقعات و حالات بیان کئے گئے ہیں کہ جس سے مقام نبوت و رسالت کی کسر شان ہی نہیں بلکہ توہین انبیا ء شمار ہوتی ہے۔

مزید پڑھیں >>

سلطنت عثمانیہ کی تاریخ کو مسخ کرنے کی کوششیں اور ان کا توڑ

سلطنت عثمانیہ میں پرنٹنگ پریس بہت پہلے سے موجود تھا لیکن اس زمانے کی کتابوں جیسا کہ وسیلۃ الطبع س ے صاف ظاہر ہے کہ سلطنت عثمانیہ کے وزیروں کی طرف سے اس کی ضرورت محسوس کیے جانے کے باوجود اس کے تاخیر سے شروع ہونے کی وجہ یہ تھی کہ اس کام کے ماہر افراد کی کمی تھی اور اس کام کو محنت طلب کام سمجھا جاتا تھا اور حکومت کو اس کام کے قابل افراد نہیں ملے جو یہ کام کر سکتے ہو اور جب ابراہیم آغا نے اس کا باقاعدہ آغاز کیا تو یہ مشکل بھی دور ہوگئ اور سلطنت عثمانیہ میں باقاعدہ طور پہ پرنٹنگ پریس کا کام شروع ہو گیا۔

مزید پڑھیں >>

سقوط غرناطہ اور امریکہ

اس وقت دنیا بھر میں جاری امریکی جارحیت کے تانے بانے سقوط غرناطہ کی دستاویز سے ملتے ہیں۔ اگر مسلم حکمران اس تاریخی حقیقت کو غور سے دیکھیں توانہیں معلوم ہو گا کہ ان کے اقتدار کا انحصار نیویارک اور واشنگٹن سے تعلق استوار کرنے میں نہیں بلکہ نیویارک اور واشنگٹن کے مفادات کے تحفظ کرنے میں ہے.

مزید پڑھیں >>

صلحِ حدیبیہ: غور و فکر کے چند پہلو

 معاہدہ کی تمام شقیں بہ ظاہرمسلمانوں کے خلاف تھیں ؛ لیکن آپ انے تمام کومنظورفرمایا۔ دراصل آپ ا کے پیش نظرمستقبل تھاکہ ایک بارمعاہدہ ہوجانے کے بعدسکون واطمینان کے ساتھ دعوتِ دین کے فریضہ کی ادائے گی کی طرف توجہ دی جاسکے گی، جس کے نتیجہ میں دیگرقبائل ِ عرب کے دائرۂ اسلام میں داخل ہونے کاقوی امکان تھا۔ ہوابھی ایساہی۔ مدتِ معاہدہ میں اچھے خاصے لوگ حلقہ بگوشِ اسلام ہوئے۔

مزید پڑھیں >>

اسلامى تہذيب کيوں کر زوال پذير ہوئى؟

عالم اسلام کى اندرونى تبديليوں کا تجزيہ کريں تو معلوم ہوگا مادى اور غير مادى وسائل کے حوالے سے مسلمانوں کا زوال صديوں پہلے شروع ہوچکا تھا. نظام خلافت ميں ضعف، منگولوں کے حملے اور ان کے کبھى نہ بھرنے والے زخم مسلمانوں کے زوال کى سرعت کا باعث بنے، اسى زمانے ميں اہل يورپ عالم اسلام سے تجارت اور صليبى جنگوں کے ذريعے پيدا ہونے والے نزديکى تعلقات کى بدولت اپنى ثقافتى اور علمى تحريک و بيدارى کا آغاز کرچکے تھے.

مزید پڑھیں >>