عقائد

جشن عید میلاد النبی کی حقیقت

جشن عیدمیلادالنبی منانا بدعت مروجہ ہے جو 625 ہجری میں ایجاد کی گئی۔ اس میں حب رسول کی کوئی بات نہیں پائی جاتی ہے، یہ حب رسول کے نام پر سراسر دھوکہ، فراڈ، دنیاطلبی، بدعات اور سیئات کوفروغ دینا ہے۔ اللہ تعالی ہم سب کو محبت رسول کےاس جھوٹے دعوے اور جھوٹے دعویداروں سے بچائے۔

مزید پڑھیں >>

دین میں عقیدۂ آخرت کا مقام

آخرت پر ایمان کا مطلب اللہ تعالیٰ کی صفات عدل و حکمت، زحمت و ربوبیت اور اس کی قدرت کاملہ پر ایمان لانا ہے۔ یہ شریعت و طاعت اور عمل خیر پر قیام کی بنیاد ہے، نیز رسالت و نبوت کی اصل بھی یہی ہے، کیونکہ رسول کو رسول کہا اسی لئے گیا کہ وہ اس کا پیغام لے کر آئے اور نبی کا نام نبی اسی وجہ سے پڑا کہ انھوں نے اس نباء عظیم کی خبر دی۔

مزید پڑھیں >>

مشکل نذر کا کفارہ

اسلام نے ہمیں نذر ماننے سے روکا ہے کیونکہ آدمی نذر پر بھروسہ کرلیتا ہے جبکہ ہرچیز کا اختیار اللہ کے پاس ہے ، وہی جو چاہتا ہے ہوتاہے ،اس لئے مسلمان کو اللہ پر بھروسہ رکھنا چاہئے اور مشکل سے مشکل وقت میں اس کی طرف رجوع کرکے صدقہ، دعا، استغفاراور نیکی کے ذریعہ آسانی کا سوال کرنا چاہئے ۔ اللہ تعالی بندوں پر نہایت ہی مہربان اور بڑا ہی شفقت کرنے والا ہے ۔

مزید پڑھیں >>

سپر طاقت صرف اللہ ہے(آخری قسط)

نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے عدی بن حاتم طائی سے اپنی گفتگو میں تین باتوں کی طرف خصوصی طور پر اشارہ فرمایا۔ آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم کی سیرت کا کمال یہ ہے کہ اس کا مطالعہ کریں تو ہر دور میں پیش آمدہ مسائل و مشکلات میں راہ نمائی اور روشنی ملتی ہے۔ جن تین چیزوں کی طرف آنحضور صلی اللہ علیہ وسلم نے اشارہ فرمایا تھا اور جو عدی بن حاتم طائی کے قبول اسلام میں بظاہر رکاوٹ تھیں ان میں پہلی چیز معاشی تنگ دستی اور مادی وسائل کی قلت ہے۔ دوسری چیز امن و امان کی کیفیت ہے جو اس وقت بہت ناگفتہ بہ تھی۔ تیسری دنیا کی سوپر طاقتوں اور تاجداروں کا خطرہ، جو اپنے مقابلے پر نہ کسی کو برداشت کرتے ہیں نہ سر اٹھانے کا موقع دیتے ہیں ۔ آج بھی کم و بیش یہ تین مسائل امت کو بڑی شدت سے درپیش ہیں ۔

مزید پڑھیں >>

سپر طاقت صرف اللہ ہے (قسط اول)

دنیا میں باطل قوتیں ہمیشہ یہ دعوے کرتی رہی ہیں کہ وہ سپر ہیں اور لوگ اس کو تسلیم کرتے رہے ہیں مگر حقیقت یہ ہے کہ سپر طاقت صرف ایک ہے اور وہ اللہ رب العالمین کی ذات ہے۔ وہ ہمیشہ سے ہے اور ہمیشہ رہے گا۔ وہ قوتیں کیسے سوپر ہوسکتی ہیں جن کا اقتدار آج تو اوج پر ہے اور کل فنا کے گھاٹ اترنے والی ہیں ۔ اللہ کو قادر مطلق ماننے والے کسی مادی قوت کو خاطر میں نہیں لاتے نہ اسے سوپر تسلیم کرتے ہیں ، نہ اس سے مرعوبیت اختیار کرتے ہیں ۔ بھلا جو مرعوب ہوگیا، وہ کیا مقابلہ کرے گا۔

مزید پڑھیں >>

مردوں سے وسیلہ پکڑنے والی حدیث ضعیف ہے!

مردے زندوں کی کچھ بھی مدد نہیں کرسکتے ہیں بلکہ وہ خود زندوں کے محتاج ہیں تاکہ انہیں دعاواستغفار اورصدقہ وخیرات کے ذریعہ فائدہ پہنچائے۔ اس قسم کے گھڑے ہوئے واقعات صوفی حضرات پیش بھی کرتے ہیں کہ جب کوئی زندہ، مردوں کی قبر پر جاتا ہے تو مردے زندوں کو ایسے دیکھتے ہیں جیسے جنموں کا پیاسا پانی کی طرف دیکھتا ہے تاکہ کچھ ایصال ثواب کردے اور مردوں کو راحت نصیب ہو۔ اس بات پر کہ مردوں کو ہم نہیں سنا سکتے، وہ ہمارے کچھ بھی مدد نہیں کرسکتے، وہ کسی کے نفع ونقصان کا ذرہ برابر اختیار نہیں رکھتے قرآن کے بے شمار دلائل ہیں اور اسی طرح احادیث سے بھی ثابت ہے

مزید پڑھیں >>

جھاڑ پھونک وغیرہ میں جنّوں کا سہارا لینا شرک ہے!

قرآن وسنت کے رو سے مصیبت کے وقت فریاد طلب کرنا عبادت ہے۔ اور جب استعاذہ عبادت ہے تو غیر اللہ سے طلب کرنا شرک اکبر قرار پائے گا جو ملت سے خارج کردینے والا عمل ہے۔ لہذا جو جن اور شیطانوں سے مدد طلب کرے وہ کفر اکبر کا مرتکب ہونے کی وجہ سے کافر ہے۔ اور وہ مشرک باللہ ہے جو تعویذ وگنڈے بناکر شیطانوں اور سرکش جِنّوں کی مدد حاصل کرتا ہے، اس کے لئے اپنے تعویذوں اور طلاسم میں شیطانی نام لکھتا ہے۔ اور ایسے ہی مصیبت اور خوف کے وقت جِنّوں کو مدد کے لئے پکارنا یہ سب شرک اکبر کی قسم سے ہے۔کیونکہ اس میں اللہ سبحانہ وتعالی کے علاوہ سے مدد طلب کرنے کا عمل ہے۔

مزید پڑھیں >>

نماز عصر کا ضیاع ، سارے نیک اعمال کا ضیاع ہے !

ایک مسلمان کے اوپر دن ورات میں پانچ وقت کی نمازیں فرض ہیں جنہیں اپنے اپنے وقتوں پر اد ا کرنا ہے ، ان کا تارک قرآن وحدیث کی روشنی میں کافر ہے ۔پنچ وقتہ نمازیں فریضہ ہونے کے ساتھ اپنے دامن میں نمازی مومنوں کے لئےہزاروں فیوض وبرکات لئے ہوئے ہیں ۔دل کا سکون ، پریشانی کا حل ، بیماری سے شفا، آنکھوں کی ٹھنڈک ، مال ،اولاداور زندگی میں برکت ، گناہوں کی مغفرت، درجات کی بلندی، خالق ومالک کی قربت اور اس کی نصرت ومہربانی، شروفساد سے پناہ ، دنیا میں عزت وراحت اور آخرت میں کامیابی وکامرابی یہ سب اور ان کے علاوہ بے شمار خوبیاں نماز میں ہیں ۔ اس کا سب سے عظیم فائدہ یہ ہے کہ اللہ تعالی اپنے بندوں کو جہنم سے دور کردے گا اور جنت ان کا ٹھکانہ بنائے گا۔

مزید پڑھیں >>